شروع میں ڈر لگتا تھا کہ پتہ نہیں میں قرآن کیسے لکھوں گی مگر ۔۔ 19 سالہ لڑکی نے قرآن کو ایک سال میں کیسے تحریر کیا؟ جانیئے اس سے متعلق چند باتیں’

قرآنِ پاک مسلمانوں کے لئے سب سے عظیم کتاب ہے اور اس کی اہمیت سب سے بڑھ کر ہے۔ قرآن پاک عربی زبان میں لکھا جاتا ہے اور اس کو لکھنے والوں کی اکثریت خطاطوں یعنی کیلیگرافر کی ہے۔ آج کل کیلیگرافی کا بڑھتا ہوا رجحان لوگوں کو قرآنِ پاک کی جانب زیادہ تیزی سے متوجہ کر رہا ہےاس

دور میں جہاں ڈھیروں اور بے شمار قرآن پڑھنے اور لکھنے والے ہیں وہیں 19 سالہ ایک لڑکی نے بھی قرآنِ پاک کو 8 ماہ میں لکھ کر سب کے دلوں میں ایک خاص جگہ بنا لی ہے۔انڈیا سے تعلق رکھنے والی فاطمہ صہبا 19 سال کی ہیں، ان کو بچپن سے ہی خطاطی کا بہت شوق تھا اور ان کا یہ شوق جوانی میں مذید بڑھتا گیا، شوق کے ہیشِ نظر فاطمہ نے اپنی پڑھائی کے ساتھ قرآنِ پاک 1 سال 2 ماہ کے عرصے میں لکھ کر نہ صرف اپنے والدین کا سر فخر سے بلند کیا بلکہ ساتھ ہی ان لوگوں کو بھی پیغام دیا جو خطاطی کے فن سے آگاہ ہیں اور اس کام میں دلچسپی رکھتے ہیں۔فاطمہ کہتی ہیں کہ: ” میری دلی خواہش تھی کہ میں قرآن پاک کو جلد سے جلد لکھ لوں، شروع میں ڈر لگتا تھا کہ پتہ نہیں میں قرآن کیسے لکھوں گی مگر صرف اللہ کی مدد سے میں نے ایک سال میں پُورا قرآنِ پاک لکھ لیا، جب جب میں قرآن لکھنے بیٹھتی تو پہلے پینسل اٹھاتی اور پھر سادے بلیک پوائنٹر کا استعمالکرتی،

میری امی میرے ساتھ بیٹھتی تھیں اور جب جب میں کوئی غلطی کرتی تو امی مجھے بتاتی تھیں کہ یہ غلط ہے اس کو ٹھیک کرو، بعض اوقات قلم سے لکھتے وقت بھی غلطی ہو جاتی تھی تو پھر میں دوبارہ سے لکھتی تھی یوں جلد ہی میں نے قران کی خطاطی مکمل کی۔ ”فاطمہ مذید کہتی ہیں کہ: ” ہم پہلے اومانمیں رہتے تھے، لیکن پورا خاندان انڈیا میں رہتا تھا، مجھے وہاں بہت مزہ آتا تھا، میں وہاں بھی اس قسم کی سرگرمیوں میئں حصہ لیتی رہتی تھی اور چپن ہی سے خطاطی کرتی تھی، کبھی ایک دو سورۃ لکھتی تو کبھی کوئی آیت لکھتی، میرے خاندان والوں نے پھر مجھے آرڈٖر دینے شروع کر دیئے اوریوں میں آگے بڑھتی رہی، پھر ایک دن خواہش ہوئی کہ اب میں پورا قرآن تحریر کروں، جس پر میں نے گھر والوں اور والدین سے خواہش کااظہار کیا، پھر میرے والدین نے بھی مجھے شوق کی تکمیل کے لئے آگے بڑھنے کی اجازت دی، میری مدد کی، نہ صرف میرے والدین بلکہ بھائیبہنوں نے بھی مجھے بہت سہارا دیا۔ میں خوش ہوں کہ میں نے اپنا کام بآسانی مکمل کر لیا۔ ”

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.