وہ کونسا عمل ہے جو حقدار کو بھی بدل دیتا ہے

وہ کونسی چیز ہے جو تقدیر کو بھی بدل کر رکھ دیتی ہے۔وہ کونسا کام ہے جو تقدیر پر بھی سبقت لے جاتا ہے۔ حضرت علی ؓوہ عظیم ہستی ہیں۔ جن کے بارے میں حضور اکر مﷺ نے فرمایا: “علی میں تجھ سے ہوں اور میں تجھ سے ہوں”اور جبرائیل ؑ آکر عرض کرتے ہیں۔ آپﷺ میں آپ دونوں سے ہوں۔ نبی کریمﷺ

اللہ کے نو ر سے پید ا کیے گئے۔ حضوراکرمﷺ فرماتے ہیں کہ اے علیؓ !تم میرے بعد تم پرہیز گاروں کے پیشوا ہو۔حضرت علیؓ کی خدمت میں ایک شخص حاضر ہوتا ہے۔ اور عرض کرتا ہے ۔ کہ نظرِبد کیا ہے؟ اور اس کا علاج کیا ہے؟حضر ت علی ؓ فرماتے ہیں کہ اے انسان یا د رکھنا جب انسان اپنے سے زیادہ نعمت والے شخص کو دیکھتا ہےجس کے پاس مال ودولت ہوتا ہے۔ اور احساس کمتری میں مبتلا ہوجاتا ہے۔اس سے جو شعاعیں نکلتی ہیں یہ شعاعیں اس نعمت والے شخص کو جا لگتی ہیں۔ یو ں وہ شخص نعمتوں کے زوال کے پاس آجاتا ہے۔ اور اسے ایسی نظر لگ جاتی ہے۔ اور فرمایا:کہ اس کی کامیابی کو زوال میں بدل دیتی ہے۔ نظر جب انسان کو لگتی ہے تو اس کی کایہ بدل جاتی ہے۔ بندے کی تقدیر بدل جاتی ہے۔ آپﷺ کا فرمان ہے :”نظر کا لگناحق ہے”۔اور فرمایا تقدیر سبقت لینے لگتی ہے تو نظربد اس پر سبقت کرنے لگتی ہے۔حضرت علی ؓ فرماتے ہیں کہ نظرِ بد تیر بن کر پیوست ہو جاتی ہے۔اور انسان وہی ڈھیر ہوجاتا ہے۔اور نظر موت تک پہنچا دیتی ہے۔ ایک بندہ حضرت علی ؓ کی بارگاہ میں حاضر ہوا اس نظرِ بد سے

کیسے بچا جائے۔حضرت علی نے فرمایا کہ تم جب صبح سویرے اٹھو اور نماز کے بعد چاروں قُل شریف اور آیت الکرسی پڑھا کرواور شام کو جب سونے لگوں تب بھی یہ عمل کیا کرو۔اللہ تعالیٰ تمہیں نظربد سے محفوظ فرمائے گا۔ کفار کہتے تھے کہ ہم جس کو نظر لگائیں وہ گر جاتا ہے اس کی نعمتیں ختم ہو جاتی ہیں۔وہ زوال اور پستی کا شکا ر ہوجاتا ہے۔ وہ نبی کریمﷺ سے حسد کرتے تھے۔کہ ان کو نبوت کیوں مل گئی۔ یہ کیوں سردار بن گئے۔یہ ایسے مرتبے پر کیسے فائز ہوگئے۔تو اس وجہ سے وہ نبی کریمﷺ سے حسد کرتے تھے۔اسی طرح حضوراکرم ﷺ نے فرمایا:”نظرکا لگنا حق ہے”۔اگر نظرِبد لگے تو ہمیں یہ دعائیں پڑھنی چاہئیں۔قرآن کے پار ہ 29کی سورت القلم کی آیات 51 اور 52پڑھے ۔ یہ ہماری مفسرین کا بھی کہنا ہے۔ اوریہ نظربد کا بہترین ٹوٹکہ ہے۔ یہ آیت مبارکہ تین مرتبہ پڑھ کر اس پر دم کرے۔انشاءاللہ نظر بد دور ہوجائےگی۔ نظر بد سے بچنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ آپ جب بھی کسی کو دیکھیں ۔ اللہ کی نعمتوں کا شکر ادا کرنا چاہیے ۔ اللہ تعالیٰ فرماتا ہے “اگر تم میری نعمتوں کا شکر ادا کروگےتو میں تمہیں اور زیادہ دوں گا”۔ تو اگر تمہارے پاس نعمتیں ہیں تو اللہ کا شکر ادا کریں۔ شکر ادا کرنے سے بھی نظر بد نہیں لگتی ۔ اس لیے جب بھی کسی انسان کی کوئی چیز دیکھیں تو “ماشاءاللہ لا حول والاقوۃ الا بااللہ”پڑھ لیا کریں۔ اس سے وہ نظربد سے محفوظ رہے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *