میں اتنی گوری ہوجاتی ہوں

آج آ پ کو ایک ایسی زبردست ہوم رمیڈی بتارہے ہیں۔ جوگھڑی کی سوئی کے ساتھ آپ کا کلر فئیر کرے گی۔ اس رمیڈ ی کو آپ اپنے چہرے پر لگائیں ۔ اس رمیڈ ی کو آپ اپنے چہرے پر لگائیں اور بیس منٹ انتظا رکر یں۔ اور آپ خود دیکھیں کہ آپ کے چہرے پر ایسا گلو آجائے گاکہ آپ کا چہرہ اتنا چمک رہا ہوگا ۔

کہ آپ خود بھی حیران ہوجائیں گے۔ آپ سوچیں گے۔ یہ کوئی رمیڈی ہے یا جادو ہے۔ اس نےآپ کی سکن کو اتنا فئیر کردیا ہے۔ دراصل اس رمیڈی میں ایسے اجزاء شامل کیے ہیں۔ جن کی وجہ سے اس رمیڈی کا رنگ سو گنا بڑھ گیا ہے۔اور یہ آپ کے چہرے کو شرطیہ حسین اور فئیر بھی بنا دے گی۔ یہ کیسے ممکن ہے ؟ آپ کویہ بتاتےہیں۔ اس رمیڈ ی کو بنانے کےلیے خشک دودھ کااستعمال کرنا ہے۔ اس کےبعد بیسن، آدھاچمچ لیموں کارس اور سفید چنے جن کو پوری رات پانی میں بھگو دیا ہے۔ سب سے پہلےآپ سفید کابلی چنے لے لیں۔ ایک مٹھی کے برابر ان کوپانی میں بھگو دیں۔ پھرآپ یہ کریں ۔ جس پانی میں ان کو بھگویا تھا۔ اور بلینڈر میں اس پانی کے ساتھ ڈال کرگرینڈ کرلیں۔ا ور اس کا پیسٹ بنا لیں۔ تین چمچ کے برابر کابلی چنوں کا پیسٹ لے لیں۔ پھرآپ اس میں آدھا چمچ بیسن کے ڈال دیں۔ یہ ایکنی ، پمپلز اور ڈارک سپورٹ کو ختم کرکے سکن کو صاف وشفاف اور بے داغ بناتا

ہے۔ اس میں ایک چمچ خشک دودھ کا ڈال دیں۔ کسی بھی اچھی کمپنی کا لے لیں۔ اس میں سکن کو وائیٹ اور برائیٹ کی خصو صیات موجود ہوتی ہیں۔ اورآخر میں اس میں ایک چمچ لیموں کا تازہ رس ڈال دیں۔ اس سے سکن نیچرلی بلیچ ہوگی۔ رنگ اچھا ہوجائےگا۔ ا ب ان تمام اجزاء کو اچھی طرح سے مکس کرلیں۔ یہ ایک گاڑھا سا پیسٹ بن جائے گا۔ یہ ایک فائن پیسٹ بن گیا ہے۔ تمام اجزاء ایکجان ہوگئے ہیں۔ اب ہماری رمیڈ ی تیار ہے۔ اس کو استعمال کیسے کرنا ہے؟ کہ آپ کو ایکسٹرا فئیر نس حاصل ہو۔ پھر اس پیسٹ کو آپ برش کی مدد سے اپنے چہرے پر لگائیں۔ پورے چہرے کو کور کرلیں۔ اگر چاہیں تو یہ پیسٹ زیادہ مقدارمیں بنا کر آ پ اسے اپنی گردن پر بھی اپلائی کرسکتے ہیں۔ جب یہ لگا لیں ۔ تو د ومنٹ ہلکے ہاتھوں سے مسا ج کریں۔ اور بیس منٹ کے لیے چھوڑ دیں۔ اور بیس منٹ کے بعد اپنے چہرے کو سادے پانی سے دھو لیں۔ اس کے بعد اپنے چہرے کو خشک ہونے دیں۔ اگر آپ کےپاس بادا م یا زیتون کا تیل ہے ۔وہ اپنےچہرے پر مسا ج کرتے ہوئے لگائیں۔ اس رمیڈی کا رزلٹ آپ کو بہت ہی اچھا ملے گا ۔ کہ آپ کو بازاری کریم لینے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *