عورت کی 2 حرکتوں سے مرد تڑ پ جاتا ہے جو کہ عورت کو خود پتہ نہیں ہوتا؟

کچھ لوگ محبت کے اہل نہیں ہوتے۔ انہیں اپنی ذہانت پر اس قدر مان ہوتا ہے۔ کہ وہ دوسروں میں کیڑے نکال کر کسی اور کاقد چھوٹا کرکے کسی دوسری کی خوبیوں میں خرابی کا پہلو نکال کر اپنی عظمت کی کلا جگاتے ہیں۔ محبت میں ہم جس کا ساتھ چھوڑتے ہیں ۔ اسے تو زندگی میں کسی مقام پر

صبر مل جاتا ہے۔ سکون آجاتا ہے۔ لیکن جو ساتھ چھوڑتا ہے۔ اس وقت کچھ محسوس نہیں ہوتا پرجیسے جیسے وقت گزرتا ہے ۔ سکون تباہ ہونا شروع ہوجاتا ہے۔ پھر وہ پچھتاوے کی آگ میں جلتا ہے۔ ہر مرد کی یہ آرزو ہوتی ہے۔ وہ عورت کو اس کی پٹڑی سے اتارے اور اپنے راستے پر لے کر چلے۔ عورت اپنی عمر کے بارے میں اس وقت جھوٹ بولنا شروع کرتی ہے۔ جب اس کا چہرہ سچ بولنا شروع کردے۔ رشتے احساس سے بنتے ہیں۔ رنگ نسل دیکھ کر تو جانور خریدے جاتے ہیں۔ بند آنکھوں میں نظر آنے والے وہ لوگ ہوتےہیں۔ کہ دل کے اس کونے میں بستے ہیں۔ جہاں سے محبت جنم لیتی ہے۔ جب عورت نکاح نامے پر دستخط کرتی ہے۔ تو وہ اس کاغذ پر اپنی ساری زندگی شوہر کے نام کر رہی ہوتی ہے۔ محبت پوری ہویا آدھی عورت کو مرد پورا چاہیے ہوتا ہے۔ دوسری عورت میں بٹا ہو انہیں۔ مجھے لوگوں کو پڑھنا نہیں آتا مگر ان پر اعتبار کر کے ایک سبق ضرور مل جاتا ہے۔ ایک وقت آتا ہے۔ کہ نہ کوئی اچھا لگتا ہے نہ برا نہ صیحح نہ غلط ۔ کیونکہ وہ دل سے اتر چکا ہوتا ہے۔ تو پھر اس سے نہ ہی نف رت ہوتی ہے۔ نہ ہی

محبت رہتی ہے۔ کسی عورت کا خاموش ہوجانا دھاڑیں مار مار کر رونے کے برابر ہوتا ہے۔ کوئی عورت جب تکلیف میں ہوتی ہے۔ تو وہ آپ کو نظر انداز کرنا شروع کردیتی ہے۔ جب درد حد سے زیادہ بڑھ جاتا ہے۔ تو انسان روتا نہیں خاموش ہوجاتا ہے۔ لوگ بے وجہ خاموش نہیں ہوتے مجھے پتہ نہیں کیا سہہ چکے ہوتے ہیں۔ جب کوئی تم سے تعلق ختم کرنا چاہے گا تو سب سے پہلے وہ اپنے بات کرنے کا انداز تبدیل کرے گا۔ کسی اپنے کے دئیے ہوئے درد کا جواب صرف خاموشی ہوتی ہے ۔ اس جگہ مت جاؤ جہاں لوگ تمہیں برداشت نہیں کرتے ہو۔ وہاں جاؤ جہاں لوگ تمہارا انتظار کرتے ہوں زندگی میں ہمیشہ خوش رہو گے۔ دنیا میں سب سے زیادہ نفرتوں کا سامنا سچ بولنے والوں کو کرنا پڑتا ہے۔ جن مردوں کو لگتا ہے ۔ کہ عورت کو رولانے اور ترسانے سے محبت شدت اخیتار کرتی ہے۔ تو ان کی غلط نہیں ہے۔ جب عورت آنسو بہاتی ہے۔ تورفتہ رفتہ اس کی آنکھوں سے محبت ختم ہوجاتی ہے۔ جس دن صبر آیا تو آنسو ختم محبت ختم۔ عورت کی دو حرکتوں سے مرد تڑپ جاتا ہے جو کہ عورت کو خود پتا نہیں ہوتا۔ عورت کی خاموشی، عورت کی نظر اندازی یہ دونوں کو کرنےسے مرد تڑ پ جاتا ہے جو کہ عورت کو خود بھی پتا نہیں ہوتا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *