پرانی ہچکی کا آسان گھریلو علاج

ایک بار پھر نئے نسخے اور نئی ریمیڈی کے ساتھ آپ کی خدمت میں حاضر ہوں۔ توآج کا جو ہمارا نسخہ ہے وہ ہچکی کے بارے میں ہے ۔ ہچکی کے بارے میں میں کچھ بتانے والا ہوں۔ ہچکی ہوتا کیا ہے یہ حلق سے ایک آواز آ تی ہے اور حلق کا منہ بند ہو جا تا ہے غیر ارادی مطلب کہ اس کی حرکت

شروع ہو جاتی ہے جیسا کہ معدے ایک دم سے دھڑ کتا ہے اور حلق کا منہ بند ہو جا تا ہے پھر جب وہ کھلتا ہے تو اس سے ایک آ واز پیدا ہوتی ہے اور یہ ہوتی کس وجہ سے ہے ا س کے مختلف اسباب ہیں۔ سب سے بڑی وجہ اس کی جو ہے وہ خشکی ہے جب اندر خشکی زیادہ ہو جاتی ہے تو ہچکی شروع ہو جاتی ہے اب اکثر ہچکی ایسے لگ جاتی ہے کہ ہچکی شروع ہو ئی ہے۔لیکن کچھ پل کے بعد وہ بند ہو گئی ہے لیکن کچھ لو گوں کو ہچکی شروع ہو تی ہے تو وہ ہچکی ختم ہونے کا نام نہیں لیتی۔روٹین بن جاتی ہے کہ مطلب روزانہ ایک وقت بن جاتا ہے ایک دن میں لگاتار گھنٹہ یا آ دھا گھنٹہ ہچکی لگی رہتی ہے اور کچھ لوگ میں نے ایسے بھی دیکھے ہیں کہ ان کی ہچکی بند ہی نہیں ہوتی مطلب یوں کہہ لیں اس کی ہچکی بند ہی نہیں ہوتی اس کی مختلف قسم کی وجو ہات ہیں اور ا سباب ہیں۔ اسباب اس طرح آ جاتے ہیں کہ اگر آپ کا درجہ حرارت تبدیل ہو گیا ہے یا آپ ٹھنڈے

علاقے میں رہ رہے ہیں تو آپ ایک دم گرم علاقے میں چلے گئے ہیں۔ اور اس کے علاوہ آپ گرم علاقے میں تھے تو ایک دم سے اچانک ٹھنڈے علاقے میں چلے گئے ہیں تو یہ سب اسباب ہیں ہچکی لگنے کے ۔ ان اسباب پر بھی غور کیا کیجئے۔ یا بو تلوں کا زیادہ استعمال کرتے ہیں سگریٹ نوشی زیادہ کرتے ہیں اور اس کی ایک وجہ تیزابیت ہو سکتی ہے تیزابیت کا زیادہ ہو جا نا اس وجہ سے بھی ہچکی لگ سکتی ہے بد ہضمی کی وجہ سے بھی ہو سکتی ہے اور اگر آپ کا جگر صحیح طریقے سے کام نہیں کر رہا تو اس سے بھی یہ مسئلہ ہو سکتا ہے اور اگر گردوں کا مسئلہ ہے تو اس وجہ سے بھی یہ مسئلہ ہو سکتا ہے تو یہ سارے اس کے اسباب ہیں علامات میں یہی ہے کہ ہچکی لگ جاتی ہے اس کا جو بہترین اور بے حد آ سان نسخہ ہے بڑی مختصر سی چیزیں ہیں صرف تین چیزیں لینی ہوں گی۔ تو ہمیں صرف تین چیزیں چاہیں ہوں گی ۔ نمبر ایک پر الا ئچی ۔ نمبر دو گلاب کی پتیاں اور نمبر تین پر ہمیں چاہیے ہوگا پو دینہ خشک۔ پو دینہ آ پ تازہ بھی لے سکتے ہیں پو دینہ آپ تازہ بھی لے سکتے ہیں اور اگر تازہ پو دینہ نہ ملے تو آپ خشک پو دینہ بھی لے سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *