ملیریا کی بیماری کا دیسی علاج

ملیریا ایک بخار ہے جو کہ خاص قسم کے مچھر کے کاٹنے سے ہوتا ہے ایک اندازے کے مطابق دنیا میں ہر سال بے لاکھ افراد ملیریا سے ہلاک ہو جاہتے ہیں۔ ۔ملیریا کا جرثومہ مادہ اینوفلی میں پایا جاتا ہے یہ مچھر عام طور پر رات کو کاٹتا ہے یہ کسی انسان کو کاٹنے کے دوران اس کے خون میں جراثیم

منتقل کر دیتی ہے جہاں یہ جراثیم ۱۴ دنوں میں افزائش پاکر خون کے سرخ خلیوں کو تباہ کر دیتے ہیں ۔اس مرض کا علاج ممکن ہے مگر یہ بگڑ جائے تو جان لیوا بھی ہو سکتا ہے ۔ملیریا کا بخار سردی دے کر آتا ہے ۔اور پسینہ دے کر جاتا ہے ۔ جب بخار چڑھتا ہے تو کپکپی آتی ہے اور جب اترتا ہے تو پسینہ آتا ہے ۔ شروع میں کمزوری ،سردی کا احساس اور بخار ہوتا ہے۔ چند روز تک بخار آ تا جاتا رہتا ہے ۔ پھر ہر دوسرے اور تیسرے روز بخار چند گھنٹوں کے لئے آتا ہے اور باقی دنوں میں مریض کم وبیش ٹھیک رہتا ہے ۔اس بخار میں منہ کا ذائقہ کڑوا ہو جاتا ہے اور جسمانی کمزوری ہو جاتی ہے۔ جسم میں درد اور پٹھوں میں کھنچاؤ ہوتا ہے ۔ مریض کا ہاضمہ خراب ہوجاتا ہے ۔متلی آتی ہے اور قے ہوتی ہےملیریا کے جراثیم

ایک انسان سے دوسرے تک منتقل ہوتے ہیں ،لہذا ہسپتالوں میں گندی سرنج اور اوزار استعمال کرنے سے بچنا چاہئیے۔مچھروں کی افزائش چونکہ ٹہرے ہوئے پانی میں ہوتی ہے چنانچہ جہاں پانی کھڑا ہو وہاں جراثیم کش ادویات (ڈی ڈی ٹی یا مٹی کا تیل ) اس پانی میں ڈال دینا چاہئےمچھروں سے بچنے کے لئے گھر کے دروازے اور کھڑکیوں میں باریک جالی ہونی چاہئے ۔گھر میں باقاعدگی سے مچھر مار اسپرے ہونا چاہئے ۔پانی کی نکاسی کے نظام کو درست بنانا چاہئے۔مریض کو زیادہ سے زیادہ آرام کرنا چاہئے ۔الٹی ہونے کی صورت میں دوا اور گلوکوز انجیکشن کے ذریعے دیتے رہنا چاہئے تاکہ پانی کی کمی نہ ہو۔اس مرض کا علاج دو سے تین ہفتوں پر مشتمل ہوتا ہے ۔اس مرض کا علاج کونین کلورو کوئین سے کیا جاتا ہے ۔ آج آپ کے لیے ایک

زبردست ساٹوٹکہ لے کرآئے ہیں۔ یہ ان کے لیے ہے جن کو ملیریا بخار ہوجاتا ہے۔ملیریا بخار اکثر مچھر کے کاٹنے سے ہوجاتا ہے۔ ایسے لوگوں کے لیے ایک زبردست ٹوٹکہ ہے۔ آپ نے ایسے کرنا ہے۔ کہ پندرہ پتے تلسی کے لینے ہیں۔ اور دس عد د کالی مرچ لینی ہے۔ اور دو چمچ چینی کے لینے ہیں۔ ان تین چیزوں کو اکٹھا ابال کر اس کو آپ نے ایک دن میں تین مرتبہ پینا ہے۔ صبح ، دوپہر اورشام کوآپ نے یہ عمل تقریباً تین دن تک کرنا ہے۔ آپ کا ملیریابخار بالکل ختم ہوجائےگا۔ تلسی کے استعمال سے ہر قسم کے بخارمیں فائدہ ہوتا ہے ۔روزانہ تلسی کے پتے کھانے سے ملیریا نہیں ہوتا ۔اگر ملیریا ہوجائے تو بخار آنے پر بائس تلسی کے پتے او ر بیس پسی ہوئی سیاہ مرچ کو دو کپ پانی میں چائے کی طرح ابال لیں۔ چوتھائی پانی رہنے پر مصری ملا کر ٹھنڈا کر کے پلائیں ۔اگر یہ ممکن نہ ہو تو تلسی کے پتے اور سیاہ مرچ چبا سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *