گرمیوں کا خاص علاج اور قیمتی فائدے

گرمیوں کے آتے ہی جگر کی گرمی ، یرقان، معدے کی گرمی ، بھو ک نہ لگنا، مثانے کی گرمی ، ہاتھ پاؤں کی جلن اوریورین کےآنے میں دشواری اور جلن جیسے امراض عام ہوجاتے ہیں۔ ان امراض سے پریشان ہوکر بہت سے بہن بھائی مہنگی ادویات اور فیسوں کی مد میں اپنا پیسا پانی کی طرح بناتے ہیں۔

لیکن آپ کو جوآج علاج بتائیں گے۔ وہ کچن میں موجود ہے۔ اگر اللہ تعالیٰ کی ان نعمتوں کو صیحح طریقےسے استعمال کیا جائے ۔ نہ صرف اپنا پیسا او روقت بچا سکتے ہیں۔ بلکہ قدرتی طریقے سے ان امراض سے چھٹکارا بھی پاسکتے ہیں۔وہ بھی کسی سائیڈایفیکٹ کے۔ اس علاج کو بنانےکے لیے آپ کو چاہیے ایک چھوٹی چمچ گوند کتیرا۔ تین سے چار دانے خشک آلو بخارا۔ اتنی ہی مقدار میں املی لیں گے۔ آدھے چمچ سونف ۔ اور سبز الائچی دوعدد لیں گے۔ اب ان تمام اجزاء کو مٹی کے پیالے میں رات بھر کے لیے پانی میں بھگو کر رکھ دیں۔ صبح ان تمام اجزاء کو اسی پیالے میں اچھے طرح سے

مسل دیں ۔ تاکہ بیج علیحدہ ہوجائیں ۔ بیج علیحدہ کرنے کےبعد باقی محلول کو گرینڈر میں ڈال کر مزید ایک گلاس ٹھنڈا پانی شامل کریں۔ تاکہ ڈیڑھ سے دو گلاس شربت بن جائے۔ایک چٹکی نمک اور حسب ضرورت چینی ڈال کر محلول کو اچھی طرح گرینڈ کرلیں۔ آخر میں جوس کو چھان لیں۔ اور صبح خالی پیٹ اس پانی کو استعمال کریں۔ انشاءاللہ! گرمیوں میں آپ کو کسی بھی ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ جسم کی گرمی ، دھوپ کی تپش او رشدید بخار کو کم کرنےکے لیے یہ علاج بہت ہی مفید ہے۔ گرمیوں کے تمام امراض انشاءاللہ!ٹھیک ہوجائیں گے۔ لیکن اگر آپ لو بلڈ پریشر کے مریض ہیں۔ جوڑوں اور گھٹنوں میں درد رہتا ہے۔ یا پھر گلے کے انفیکشن اور خرابی کا شکار ہیں ۔ تو اس علاج کواستعمال نہ کریں۔ گرمیوں میں اس شربت کو خود بھی استعمال کریں۔ اور اس ریسپی کو زیادہ سے زیادہ دوسروں کو بتائیں تاکہ وہ بھی اس شربت کے استعمال سے گرمی سے چھٹکارا حاصل کرپائیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *