یہ چھوٹی سی سورۃ پانی پر دم کر کے نا لا ئق بچے کو پلا دیں۔ پھر وہ کتاب پڑھے گا وہ کبھی بھولے گا نہیں۔ اللہ کی قسم ذہن کمپیوٹر سے بھی تیز ہو گا

حافظہ کی تیزی میں زیادہ کردار اورادووظائف کے بجائے گناھوں سے اجتناب کا ھوتا ہے،گناھوں سے حافظہ کمزور ہوتا ہے، خصوصا قران کریم کاحافظ اگر گناھوں سے نہ بچتا ہو تو قرآن بھی بھول جاتا ہے،اس لئے ہر طرح کے گناہ سے بچنے کا اہتمام نہایت ضروری ہے۔حفظ قران کے لئے ایک مسنون عمل

بھی حدیث کی کتابوں میں ملتا ہے،جو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت علی رضی اللہ عنہ کو بتایا تھا،حضرت علی نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آکر عرض کیا کہ یا رسول اللہ! میرے ماں باپ آپ پر قربان،میں قرآن یاد کرتا ھوں لیکن وہ میرے سینے سے نکل جاتا ہے، محفوظ نہیں ریتا، آپ نے فرمایا کہ تو میں تجھے ایسی ترکیب بتاؤں جو تجھے بھی نفع دے اور جسے تو بتائے اسے بھی نفع دے اور جو کچھ تو سیکھے تو وہ محفوظ رہے؟ حضرت علی رضی اللہ عنہ کے دریافت فرمانے پر آپ نے فرمایا کہ شبِ جمعہ میں آخری تہائ رات میں اٹھ سکے تو بہت اچھا ہے کہ یہ فرشتوں کے اترنے کا وقت ہوتا ہے اور اس وقت دعاخاص طور پر قبول ہوتی ہے،اس وقت جاگنا مشکل ہو تو آدھی رات میں اور یہ بھی نہ ہوسکے تو

رات کے شروع میں ہی کھڑا ہواورچار رکعت نمازِ نفل پڑھ ، پہلی رکعت میں سورہ فاتحہ کے بعد سورہ یسین، دوسری رکعت میں سورہ فاتحہ کے بعد سورہ دخان، تیسری رکعت میں سورہ فاتحہ کے بعد سورہ الم سجدہ اور چوتھی رکعت میں سورہ فاتحہ کے بعد سورہ ملک پڑھ اور چوتھی رکعت کی التحیات سے فارغ ہونے کے بعد اللہ تعالی کی حمدوثنا اورمجھ پر درود وسلام بھیج، تمام انبیا علیھم السلام کو بھی درود بھیج اوراس کے بعد تمام مومنین اور تمام مرحوم مسلمانوں کے لئے استغفار کر اور پھر درجِ ذیل دعا مانگ:اللھم ارحمنی بترک المعاصی ابدا ما ابقیتنی، وارحمنی ان اتکلف ما لا یعنینی، وارزقنی حسن النظر فیما یرضیک عنی،اللھم بدیع السماوات والارض ذاالجلال والاکرام والعزۃ التی لا ترام اسئلک یا اللہ یا رحمن بجلالک ونور وجھک ان تلزم

قلبی حفظ کتابک کما علمتنی، وارزقنی ان اقراہ علی النحو الذی یرضیک عنی، اللھم بدیع السماوات والارض ذاالجلال والاکرام والعزۃ التی لا ترام اسئلک یا اللہ یا رحمن بجلالک ونور وجھک ان تنور بکتابک بصری، وان تطلق بہ لسانی، وان تفرج بہ عن قلبی، وان تشرح بہ صدری، وان تغسل بہ بدنی؛ فانہ لا یعیننی علی الحق غیرک، ولا یؤتیہ الا انت، ولا حول ولا قوۃ الا باللہ العلی العظیم۔پھر حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ اے علی! اس عمل کو تین جمعہ یا پانچ جمعہ یا سات جمعہ کر،ان شاء اللہ دعا ضرور قبول ہوگی۔(سنن ترمذی ومستدرک حاکم)۔یہ عمل حضرت مولانا زکریا صاحب رحمہ اللہ نے اپنے رسالےفضائل قرآن کے آخر میں بھی میں بھی ذکر کیا ہے۔اگر حافظ نہ ہونے کی بنا پر اس عمل کا کرنا مشکل ہو تو ہر نماز کے بعد گیارہ بار “رب اشرح لی صدری ویسر لی امری واحلل عقدۃ من لسانی یفقھوا قولی”پڑھیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.