آج کل کی نسل کے لیے ایک بہت ہی بہترین اور اہم پیغام ایک قصے کی صورت میں ۔

ایک مرتبہ مدینہ میں ایک شخص کسی عورت سے چھپ چھپ کر ملتا تھا اس سے باتیں کیا کرتا تھا اور یہ بات مدینے میں پھیلنے لگی جیسے ہی اس بات کا علم حضرت علی کو ہوا آپ نے اس شخص کو تنہائی میں بلایا اور فرمانے لگے میں نے اللہ کے رسول سے سنا کہ جب کوئی غیر مرد کسی عورت

سے باتیں کرتا ہے تو اس کے نیک اعمال ایسے ختم ہوتے ہیں جیسے آگ لکڑی کو ختم کرتی ہے تو وہ کہنے لگا یا علی ہم کوئی گناہ نہیں کرتے صرف بات کرتے ہیں ۔حضرت علی نے کہا اے انسان تم یاد رکھنا انسان کی شخصیت میں مختلف جذبات ابھرتے رہتے ہیں۔ شیطان انہیں جذبات کے وسیلہ سے انسان کو گمراہ کرتا ہے ۔جب ایک عورت اور مرد اکیلے ہوتے ہیں تو ان کے درمیان تیسرا شخصیت ان ہوتا ہے اور وہ کوشش کرتا ہے کہ ان کے درمیان ایسے جذبات ابھارے جائیں جن سے وہ گناہ کی طرف مائل ہو جائیں ۔اللہ نے یہ جو قانون انسان کے لیے بنائے ہیں وہ انسان کی بہتری کے لئے ہی ہیں ۔یاد رکھنا اگر تم کسی عورت کو دوست بنانا چاہو تو اس عورت کو بناؤ جو اللہ نے تمہارے لیے محروم رکھا ہے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.