رات کو بستر پر سیدھے لیٹ کر چند بار قرآن کی اس آیت کا ورد کرلیں۔ پھر جو کچھ ذہن میں ہوگا خود بخود پورا ہو تا جائے گا ، پرسکون نیند بھی آجائےگی

زندگی کےبہت سے مسائل اور پرسکون نیند کےلیے ایک طاقت ور وظیفہ ہے۔ جو کہ قرآن مجید لےکر آئے ہیں۔ سب سے پہلے آپ کو نماز کے متعلق چند احادیث کا بتا تا ہوں۔ حضرت محمدﷺ کے پیارے رب عزوجل نے قرآن مجید کے اندر بارہ مرتبہ نما ز کا حکم دیا ہے۔ اور بڑی مرتبہ اللہ پا ک نے ارشاد فرمایاہے ۔

میرے نبی کریم ﷺ کا ارشاد فرمان ہے: کہ نماز دین کا ستون ہے۔ جس نے اس کو قائم رکھا اس نے دین کو قائم رکھا ہے۔ اور جس نے اس کو چھوڑ دیا اس نے اس کو ڈھا دیا ہے۔ یعنی گرا دیا۔ نما ز کی کتنی اہمیت اور فضیلت ہے کہ نماز دین میں ستون کی اہمیت رکھتا ہے۔ اللہ رب العز ت کی بارگاہ میں ایک ستون ہے۔ اللہ پاک کی بارگاہ کے اندر نیکیوں کا بڑھانا اور اللہ کی بارگاہ میں ہمیں ایک سرخرو ہونے کا موقع ہے۔ خدا کی قسم کوئی شخص گھر بناتا ہے اور اس گھر میں ستون نہ بنائے یا پلڑ نہ بنائے تو گھر کی بنیا د بھی نہیں کھڑی ہوسکتی ہے۔ دیواریں بھی ستون کی مانند ہوتی ہیں۔ اگر دیوار نہ بنائی جائے تو گھر ہی گر جاتاہے۔ یادرکھیں اگر نماز کی جو اہمیت ہے وہ بھی اسی طرح ہے ایک دیوار کی مانند ہے ایک ستون کی مانند ہے۔ میرے پیارے بہن اور بھائیوں :اگر تم دنیا اور آخرت میں سرخرو ہونا چاہتے ہو تو نماز کی پابندی کریں۔ ایک اور حدیث سناتے ہیں جو اس حوالے سے ہے کہ ہمارے پیارے نبی کریم ﷺ نے فر مایا: کہ نماز ایک نور ہے ۔ نما ز ایک نور ہے اس کا مطلب کیا ہے اس کا مقصد کیا ہے؟ حضرت سید نا

امام ابوعزرؑ نما ز کے نور ہونے کی وضاحت کرتے ہوئے لکھتے ہیں۔یہاں پر نور سے مطلب جس طرح نور کے ذریعے روشنی حاصل کی جاتی ہے۔ اسی طرح نماز بھی گناہوں سے باز رکھتی ہے یعنی روکتی ہے۔ اور بے حیائی اور برے کاموں سے روکتی ہے۔ آپ رسول کریم ﷺ کا فرمان ہے: کہ جب بندہ نماز کےلیے کھڑا ہوتاہے۔ اس کےلیے جنتیوں کے دروازے کھول دیے جاتےہیں۔ اور اس کے اوپر پروردگا ر کے درمیان حجابات یعنی پردے ہٹا دیے جاتے ہیں۔ اور حورین یعنی بڑی بڑی آنکھوں والی حوریں اس کا استقبال کرتی ہیں۔ جب تک وہ نماز میں رہتا ہے۔ تو حوریں بھی اس کا استقبال کرتی ہیں۔ جس وظیفے سے متعلق آیت بتانی ہے اس قرآنی آیت کے بارے میں ایک روایت ہے کہ حضرت ابو دردا ءسے روایت ہے کہ حضور اکرم ﷺ نے فرمایا: کہ جو شخص “سورت کہف” کی آخری دس آیات کو یاد کرے گا۔ وہ دجا ل کے فتنے سے محفو ظ رہے گا۔ رات کو جب سونے لگیں تو سورت کہف کی آیت گیارہ کا ورد کرنا شروع کردیں۔ اس آیت کے پڑھنے سے بہت بہترین نیند آتی ہے۔ جو بندہ پڑھتا رہتاہے وہ زندگی کے مسائل مثلاً جادو، جنات، گھریلو پریشانیاں ، کاروباری الجھنیں،روحانی اور جسمانی بیماریاں کےلیے بھی بہت لاجواب ہے۔ اس کو باوضو یا بے وضو ہر حالت میں پڑھ سکتے ہیں۔ جب تک مقصد حاصل نہ ہو۔ تب تک اس عمل کو جاری رکھیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.