میرا شوہر نا مرد ہے ۔ کنٹرول نہیں ہو تا۔ قربت کے لیے دوسرا نکاح کر سکتی ہوں۔

مولوی صاحب میری شادی کو بارہ سال ہو گئے ہیں میرے د و بچے ہیں میرا شوہر دوسرے بچے کی پیدائش کے بعد نا مردگی کا شکار ہو گیا ہے۔ سات سال سے ان کا علاج ہو رہا ہے اور وہ سات سال سے میرے پاس نہیں آئے ۔ کوئی صورت نظر نہیں آرہی اس کے ٹھیک ہونے کی مجھے

ڈر ہے کہ مجھ سے ز ن ا نہ ہو جا ئے میں ایک شوہر کے ہوتے ہوئے دوسرا نکاح کر لوں میرے بچے ہیں اس لیے ط ل ا ق نہیں لینا چاہتی ز ن ا سے بچنے کے لیے دوسرے نکاح کر نا چاہتی ہوں کیا یہ جا ئز ہے مجھے رہنمائی کر دیجئے۔ دیکھیں ۔ ایک بہن کی شادی کو بارہ سال ہو گئے ہیں دو بچے ہوئے پھر اس کے بعد شوہر نا مرد ہو گئے اب وہ علاج بھی کروا رہے ہیں عورت کو کیا کر نا چاہیے ظاہر ہی سی بات ہے کہ اللہ ہر مرد و عورت کے اندر خواہشات رکھی ہیں۔ جراثیم رکھے ہیں کہ جو ایک دوسرے کی تمنا کر تے ہیں جو ایک دوسرے کی خواہشات کو پورا کر تے ہیں او ر اگر ان خواہشات کو پورا نہ کیا جا ئے تو ہم نے دیکھا ہے کہ بڑے سے بڑے لوگ جو بہت متقی پرہیز گار ہیں وہ بھی ان کا بھی برا حال ہو تا ہے وہ بھی برائی میں چلے جا تے ہیں اس لیے شادی نصف ایمان ہے شادی حضور کریم نے فر ما یا کہ میری

سنت ہے جب انسان شادی کر تا ہے تو انسان گ ن ا ہ وں سے بچ جا تا ہے اب صورت اس صورت کے اندر یہ بہن ظاہر ہی سی بات سات سال ایک بہت بڑا عرصہ ہو تا ہے شریعت کہتی ہے کہ اگر آپ کا شوہر نا مرد ہے ۔ ٹھیک ہے؟ اور وہ آپ کے حقوق ادا نہیں کر رہا کچھ بھی ایسا مسئلہ ہے تو اس صورت کے اندر آپ خلاء لے لیں اس سے ط ل ا ق لے لیں لیکن یہ اجازت نہیں ہے کہ آپ ایک شوہر کے ہو تے ہوئے اس کے نکاح میں ہو تے ہو ئے دوسرا نکاح کر لیں۔ مرد کو تو اللہ تعالیٰ نے یہ اجازت دے رکھی ہے کہ وہ ایک وقت کے اندرد و شادیاں کر سکتا ہے تین کر سکتا ہے چار کر سکتا ہے لیکن عورت ایک وقت کے اندر ایک ہی نکاح کر ے گی تو ہمیں اس معاملے میں سوچنا چاہیے۔ اکثر میرے پاس کیسز آ تے ہیں کہ ہمارے مرد اس قابل تو نہیں ہیں مگر وہ خود اجازت دیتے ہیں کہ اپنا کوئی دوست بنا لو اس کے ساتھ اپنی خواہشات پوری کر یں۔ یہ معاملہ خراب ہے ایک عورت ایک مرد کو تو وہ دوسرے سے رشتہ ازدواج قائم نہیں کر سکتی۔ آپ کو ڈر ہے کہ ز ن ا ہو جا ئے تو آپ اس سے ط ل ا ق لے لیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.