جو لڑکا لڑکی نیک شوہر اور بیوی پانا چاہتے ہیں یہ سورت پڑھیں

یہ وظیفہ جس کی شادی نہیں ہو رہی یا رشتے نہیں آرہے وہ لڑکی لڑکا خود بھی کرسکتے ہیں اور ان کے والدین میں سے کوئی بھی کرسکتا ہے اور یہ زیادہ بہتر ہے اگر ایک سے دو کریں یعنی اگر یہ وظیفہ جس کا رشتہ نہیں ہوتا وہ بھی کرے اور والدین میں سے بھی اگر کوئی ایک یا دو نوں کریں گے

تو اس کا اثر انشاء اللہ تعالیٰ چند دنوں میں ہوگا اور اگر اس حساب سے آپ کر لیں تو مجھے اللہ کی رحمت سے امید ہے کہ گیارہ دنوں سے لے کر اکیس دنوں میں انشاء اللہ بہت اچھا اور بہترین رشتہ آپ کو ملے گا جو پسند بھی آئے گا ۔سورہ یاسین پڑھنے کے بے شمار فوائد ہیں روزانہ نماز فجر کے بعد یا صبح و شام پڑھیں ۔غیر شادی شدہ پڑھے تو شادی ہوجائے ۔قیدی پڑھے تو رہائی پالے مقروض پڑھے تو قرض ادا ہوجائے پیاسا پڑھے تو سیراب ہوجائے مسافر پڑھے تو سفر میں آسانی ہو خوف زدہ پڑھے تو امن پالے۔ بھوک کی حالت میں پڑھے تو سیر ہوجائے ۔اس کے پڑھنے سے اچھا لباس ملتا ہے ۔ گمشدہ چیز کے واسطے پڑھے تو وہ چیز مل جائے ۔قریب المرگ کے پاس پڑھنے سے نزع میں آسانی ہو جائے۔ایک رات میں حاجت پوری: یاوہاب اس عمل کی برکت سے ایک ہی رات میں حاجت پوری ہوجائے گی یا حاجت پوری ہونے کے اسباب بن جائیں گےبشرطیکہ حاجت جائز ہو رات کو عشاء کی نماز کے بعد باوضو ہو کر کھلے آسمان تلے یعنی گھر کے صحن میں کھڑے ہو جائیں اور 100 مرتبہ یا وَھَّابُ پڑھیں اور دع کریں۔صرف چالیس دن

میں رشتہ نکاح شادی اگر رشتوں میں بندش ہو اور لڑکا لڑکی بوڑھے ہو رہے ہوں جہاں بات لگتی ہے انکار ہوجاتا ہے اول تو رشتے آتے ہی نہیں اگر آتے ہیں تو واپسی جواب نہیں ملتا۔ایسی صورت میں سورۃ التین روزانہ 60 بار فجر کی نماز کے بعد پڑھیں چالیس دن عمل کریں انشاء اللہ 40 دن کے اندر اندر کام ہوجائے گا۔غصے کی آگ کا ایمرجنسی علاج:جب بھی کسی آدمی کو غصے میں دیکھیں تو دل ہی دل میں سورہ بقرہ کی آیت نمبر18 پڑھ کر اس آدمی کا تصور کر کے پھونک دیں۔ انشاء اللہ جلد ہی اس کا غصہ دور ہوجائے گا نہایت ہی آزمودہ عمل ہے ۔حضرت عائشہ صدیقہ رضی اﷲ عنہا بیان کرتی ہیں کہ میں اور حفصہ روزے سے تھیں کہ ہمارے سامنے کھانا پیش کیا گیا جس کی ہمیں طلب بھی تھی ہم نے اس سے کھا لیا اتنے میں حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم تشریف لے آئے، حضرت حفصہ گفتگو میں مجھ سے سبقت لے گئیں اور (ایسا کیوں نہ ہوتا) وہ اپنے باپ کی بیٹی تھیں (یعنی حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کی طرح جری تھیں) کہنے لگیں : یا رسول اﷲ! ہم دونوں نے روزہ رکھا ہوا تھا پھر ہمارے پاس کھانا آیا جس کی ہمیں تمنا تھی تو ہم نے اس سے کھا لیا، آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا : کسی دوسرے دن اس کی قضاء کر لینا۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.