چار الفاظ کی ایک تسبیح 11 دن پڑھ لیں سارا دن پیسے گنتے رہو گے ۔

ایک بندہ بڑی تکلیف میں گزارہ کررہا تھا بڑا پریشان زندگی اس کی اتنی بری حالت میں تھی کہ الفاظ ختم ہوجاتے ہیں کچھ دن گزرے ظاہر ہے دنیا آپس میں رشتے دار دوست آگے پیچھے سب کو پتا ہوتا ہے کہ وہ بندہ کس حالت میں ہے تو کسی دن ایک دوست نے دیکھا کہ وہ بڑا مہنگی مہنگی چیزیں خرید رہا ہے

بڑا دولت مند ہوگیا ہے ان کا رہن سہن بد ل گیا ہے کپڑے جوتیاں وغیرہ جو اس کا سٹائل ہے وہ بہترین ہو گیاہے شاپر بھر بھر کے فروٹس جا رہے ہیں تووہ بڑا حیران ہوا یا ر یہ کیا وجہ کیا ہو اس نے اس سے پوچھا بھئی کیا ہے کوئی لاٹری نکل آئی کوئی بانڈ نکل آیا ہے کیا ہوا ہے تو اس نے کہا نہیں میں تو اسی طرح تھا جو بندہ پوچھنے والا تھا اس نے پوچھا کہ کیوں ایسے باتیں کرتے ہو یار کوئی بتاؤ ہمیں بھی تو پھراس شخص نے بتایا کہ میں ایک اتنا زبردست اور مجرب عمل کررہا ہوں کہ میرے رزق میں اتنا اللہ تعالیٰ نے اضافہ کیا کہ جیسے اس نے کہا کہ چار لفظ ہیں قرآن پاک کا عمل ہے صرف ایک تسبیح پڑھی اور ایسی برکت ہوئی ایسا میرا کام چلا ایسا میرے حالات تبدیل ہوئے کہ مجھے خود سمجھ نہیں آئی کہ کہاں کہاں سے مجھے اللہ تعالیٰ نے رزق دیا اپنی اپنی نیتوں اور اپنے اپنے یقین کی بات ہوتی ہے ۔ہم سب رزق میں وسعت اور برکت کی خواہش تو رکھتے ہیں مگر قرآن و حدیث کی روشنی میں رزق کی وسعت اور کثرت کے اسباب سے ناواقف ہیں ۔ صرف دنیاوی جد وجہد ، محنت اور کوشش پر انحصار کر لیتے ہیں۔ لہٰذا قرآن و حدیث کی روشنی میں رزق کی وسعت اور برکت کے چند اسباب موجود ہیں ۔ اگر ہم دنیاوی جدوجہد کے ساتھ ان اسباب کو بھی اختیار کر لیں۔ توا للہ پاک

ہمارے رزق میں انشاءاللہ کشادگی اور برکت عطا فرمائیں گے۔ جو ہر شخص کی خواہش بھی ہے۔ تو آج ہم اپنے دیکھنے والوں کو قرآن کی مختصر اور آسان سی سورت سے متعلق آگاہ کریں گے۔اس سورت کو پڑھنے کے بے شمار فائد ے ہیں۔ خصوصاً رزق کی تنگی ہو یا پھر کوئی کسی قسم کی بیماری ، پریشانی ہو، اس چھو ٹی اور آسان سورت کے پڑھنے سے اللہ پاک تمام مسائل کو حل فرمادیتے ہیں۔ نہ صرف آپ کے رزق میں کشادگی ہوگی۔ بلکہ قرضوں سے بھی نجات مل سکتی ہے۔ اسی طرح اور کیا کچھ فوائد ہیں ۔ ہم آپ کو بتائیں گے۔ قرآن باربار یہ توجہ دلاتا ہے۔ کہ یہ اللہ پاک کی ہستی ہے جو اپنے حکمت کے تحت جس کو چاہے زیادہ رزق عطا کرے ۔ اور جس کا رزق چاہے تنگ کردے۔ چاہے تو غریب کو امیر کردے۔ اور چاہے تو امیر کو غربت کا مزہ چکھا ڈالے۔ قر آن پاک کی مختصر اور آسان سی سورت سورت القدر ہے۔ اس کے بے شمار فوائد کی حامل یہ سورت ہے۔ اور اسی سورت میں سب سے پہلے اس میں اللہ پاک نے یہ فرمایا: کہ ہم نے اسے نازل کیایعنی کہ محمد ﷺ کی اپنی تصنیف نہیں ہے۔بلکہ اس کے نازل کرنے

والے ہم خود ہیں ۔ اس کے بعد اللہ پا ک نے فرمایا: کہ اس کا نزول ہماری طرف سے ہے۔ شب قدر میں ہوایہ وہ رات ہے جس میں تقدیر وں کے فیصلے کردیے جاتے ہیں ۔ یا بالخصوص دیگر کوئی معمولی رات عام راتوں جیسی نہیں ہے۔ بلکہ یہ قسمتوں کا بنانے اور بگاڑنے کی رات ہے۔اس سورت میں اس کتاب کا نزول محض ایک کتاب کا نزول نہیں ہے۔ بلکہ یہ وہ کام ہے جو نہ صرف قریش ، نہ صرف عرب، بلکہ دنیا بھر کی تقدیر بدل کر رکھ دے گا۔ یہ بڑی قدرو منزلت اور عظمت وشرف رکھنے والی ذات ہے۔ یہ ہزار مہینوں سے زیادہ بہتر ہے۔ جس رات کو اس سورت کا نزول کا فیصلہ صادر کیاگیا اتنی والی خیروبرکت والی رات ہے کہ کبھی انسانی تاریخ کے ہزار مہینوں میں انسان کی بھلائی کےلیے وہ کام نہیں ہوا تھا جو اس رات میں کردیا گیا ۔ اسی لیے اس سورت کو پڑھنے میں بہت خیر اوربھلائی اللہ پاک نے آپ سب لوگوں کےلیے موجود کررکھی ہے۔ روزانہ رات سونے سے پہلے سات مرتبہ سورت القدر پڑھنے سے روزی میں اضافہ، بینائی میں اضافہ، لقوہ کے مرض میں شفاء یابی اور آخرت میں نجات کا ذریعہ بنتی ہے۔ اور اگر روزانہ ایک سو تیرہ مرتبہ اس کی تلاوت کی جائے تو قلب روح میں پاکیز گی پیدا ہوجاتی ہے۔ اور منفی سوچوں سے نجات حاصل ہوتی ہے۔ اور نفسیاتی امراض سے بھی چھٹکارا حاصل ہوتا ہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.