وہ گنا ہ جس سے نکاح ٹوٹ جا تا ہے

قرآن ِ پاک میں اللہ تعالیٰ نے مسلمانوں کے لیے کچھ حدود و ضوابط کا بتا یا ہے جن حدود کی پاسداری اور اس کے ساتھ ساتھ ان حدود کی پاسداری بھی ہر مسلمان پر لازم قرار دی گئی ہے اگر مسلمان ان حدود کی پاسداری کر تا ہے تو یہ بات اس کے لیے بہت ہی اہم ہے اور یہ بات اس کے لیے

بہت ہی زیادہ فائدہ مند ہے اور اس کے ساتھ ساتھ اگر مسلمان ان حدود کی پاسداری نہیں کر تا ہے ان حدود کا احترام نہیں کرتا ہے تو ظاہر ہی سی بات ہے کہ اس کے لیے دنیا بھی تنگ کر دی جا ئے گی اور اس کے ساتھ ساتھ اس کے آخرت بھی تنگ کر دی جا ئے گی تو ہمیں چاہیے کہ اسلام کی جو بھی حدود ہیں اسلام کے جو بھی اصول ہیں ان اصولوں کی پاسداری کر یں اور اس کے ساتھ ساتھ باقی لوگوں کو بھی تلقین کر یں کہ وہ ان اصولوں کی پاسداری کر یں ا ن حدود کی رہنمائی کر یں دوسرے لوگوں کے سامنے۔ قرآنِ پاک میں اللہ نے متعدد بار ان حدود کا ذکر فر ما یا ہے اور ساتھ میں خبردار فر ما یا کہ میری قائم کردہ حدود سے تجاوز مت کر نا جیسا کہ ارشاد ہے جس کا ترجمہ ہے: یہ اللہ تعالیٰ کی حدیں ہیں ان کے پاس نہ جا نا یاد رہے کہ اللہ کی حدود کی قسمیں ہیں ایک تو وہ حدود ہیں جو کھانے پینے اور نکاح ط ل ا ق کے سلسلے میں مقرر ہیں مثلاً ان میں

کون سے عمور حلال ہیں یا کون سی حرام دوسری وہ حدود جو بطور س ز ا اللہ تعالیٰ نے مقرر کر دی ہیں۔ یعنی ایسے افعال کا ارتکاب جن سے اللہ نے منع فر ما یا ہے جیسے چ ور کی س ز ا ہاتھ کاٹنا ، جو کہ حد ہے اور غیر شدہ ز ا ن ی یا ز ا ن یا کی سو کوہڑے اور شادی شدہ زان یا رجم کی س ز ا ہے اَسی کوہڑے ہیں ان کو حدود اسی لیے کہا گیا ہے کہ ان کا ارتکاب کرنے سے منع کر دیا گیا ہے۔ اور اللہ نے یہ بار لگا دی ہے جس سے گزر جا نا ممنون قرار دیا گیا ہے آج ہم آپ کو جن حدود اور غلطیوں کے بارے میں بتانے جا رہے ہیں وہ غلطیاں ایسی ہیں جن میں میاں بیوی چاہے دانستہ طورپر ملوث ہو ں یا نا دانستہ طور پر ملوث ہوں ان کا نکاح ٹوٹ جا تا ہے۔ اور بیوی میاں کے لیے ہمیشہ کے لیے حرام ہو جا تی ہے اس لیے ان غلطیوں اور حدود کے بارے میں جا ننا ہر شادی شدہ جوڑے پر لازم ہے تا کہ وہ اپنے آپ کو ایسی غلطیوں اور گ ن ا ہ وں سے دور رکھ سکیں تا کہ ان کی زندگی میں ایسی پیچیدگیاں نہ آنے پائیں۔ جن حدود کی پاسداری بہت ضروری ہے مثلاً کہ بیوی شوہر کی ش رم گاہ نہیں چوم سکتی اور شو ہر بیوی کی ش ر م گاہ نہیں چوم سکتا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *