یہ پھل شوگر ، بلڈپریشر، تیزابیت ، موتیا، جریان، بواسیر مسوں کی جڑ ہی ختم کردے گا

جامن کا شمار موسم گرما کے انتہائی مفید پھلوں میں ہوتا ہے۔ یہ ایک چھوٹا سا پھل ہے لیکن اس کے فائدے بے شمار ہیں اسی لیے اس کے کھانے کی خاص تائید کی جاتی ہے۔ اور صرف جامن ہی نہیں بلکہ جامن کی گھٹلیاں اور پتے بھی بہت فائدہ مند ہیں، اکثر لوگ جامن کی گھٹلیاں رکھ لیتے ہیں تاکہ ضرورت

کے وقت انہیں استعمال کیا جاسکے۔جامن میں کیلشیم، پوٹاشیم، آئرن، سوڈیم، وٹامن سی اور بی، کاربوہائیڈریٹ، پروٹین، فاسفورس، فولک ایسڈ اور پانی جیسے دیگر اہم غذائی اجزا موجود ہیں جو انسانی جسم کے لیے نہایت ضروری ہیں۔ جامن کے کئی مختلف نام ہیں، اسے بنگالی میں’کالا جام اور سندھی میں جموں‘ کہا جاتا ہے۔جامن کی خاصیت ہے کہ یہ انسانی جسم میں موجود مختلف اقسام کی بیماریوں کو دور کرتا ہےجس میں معدے کی بیماریاں، آنتوں کی جلن، خراش، بلڈ پریشر کی سطح کو نارمل رکھنا شوگر کنٹرول کرنا اور کھانا ہضم کرنا وغیرہ شامل ہے۔ جامن میں موجود وٹامن سی اورآئرن کی کثیر مقدارہیموگلوبن کو بڑھانے میں اہم کردار ادا کرتا ہے جس سےخ ون کا رنگ سرخ ہوجاتا ہے پھر اسے جسم کے تمام حصوں تک پہنچنے میں مدد کرتا ہے، جس سے چہرہ صاف اور جلد چمک جاتی ہے ذیابیطس کے مریضوں کے لیےجامن کا استعمال نہایت ضروری ہے، جامن خ ون میں شوگر کی مقدار بڑھنے سے روکتا ہےتب ہی شوگر کے مریضوں کو روزانہ جامن کھانے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ جامن کی پتے بھی ذیابیطس کے مریضوں کے لیےبے حد مفید ہیں جامن کی تاثیر ٹھنڈی ہےاور اسی لیے یہ کھانے کو با آسانی ہضم کرتا ہے اس کے علاوہ یہ شدید گرمی میں ٹھنڈک کا کام بھی

کرتا ہے۔جامن کے اندر پیاس کی شدت کم کرنے اور خ ون کی گرمی کو دور کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔ جامن میں موجود آئرن خ ون کو صاف کرنے کا کام بھی کرتا ہے۔ اس کے علاوہ جسم میں آئرن کی کمی کو دور کرنے کے لیےجامن کا استعمال ضروری ہے وٹامن سی اور اینٹی بیکٹیریل خصوصیات کا حامل جامن، دانتوں کے لیے بہت مفید ہے۔ جامن کا شربت پینے یا اس کا رس دانتوں پر لگانے سے دانت سے متعلقہ تمام مسائل کو دور کیا جاسکتا ہے۔ جامن میں موجود فائبر بہت دیرتک بھوک نہیں لگنے دیتا۔ جامن وزن کو بڑھنے سے روکتا ہےاور اسے کنٹرول میں بھی رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ میں یہاں پر ایک بات او ربھی بتا تا چلوں کہ جامن جو ہے وہ آنتوں کی جلن، خراش اور کمزوری دور کرنے والی بے مثل غذا ہے اگر اس کو روزانہ زیادہ نہ سہی مگر تھوڑا بہت بھی استعمال کر یں تو اس سے ہم ہر قسم کی جسمانی جلن سے دور رہ سکتے ہیں اور ہر قسم کی کمزوری جو ہے وہ بھی ہم سے دور رہے گی۔ اور اس کے علاوہ جامن کی مدد سے ہم پیشاب کی زیادتی کو بھی کم کر سکتے ہیں اور مثانے کی کمزوری بھی اس کی مدد سے دور کی جا سکتی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *