ہفتے کا وہ دن جو انتہائی منحوس ہے ، اسی دن فرعون کو ڈبویا گیا ، مسلمانوں کو اس روز کیا عمل کرنا چاہئے ؟ لازماً جان لیں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) ہفتے کا وہ دن جو انتہائی منحوس ہے ، اسی دن فرعون کو ڈبویا گیا ، مسلمانوں کو اس روز کیا عمل کرنا چاہئے ؟ لازماً جان لیں ،،،آج میں بدھ کے دن کے حوالے سے فضیلت لے کر آ ئی ہوں۔ اس دن کے نفافل اور رات کے نفا فل احادیث مبارکہ کہ بدھ کے دن کو کس طرح

سے گزارنا چاہیے اور اس کے دن کے وظیفہ کیا ہے جو آپ نے چلتے پھرتے اٹھتے بیٹھتے آپ نے کر نا ہے وہ آپ سے حدیث مبارکہ کی روشنی میں آپ سے ذکر کروں گی تا کہ اس دن کو آپ بہتر سے بہتر بنانے میں کا میاب ہو سکیں ۔ تو رمضان المبار ک ہے اس دن میں آپ کو کس طرح سے اس دن کو گزارنا ہے کہ آپ کے لیے نعمت بن جائے رحمت بن جائے اس میں فضیلت بھی ہے اور نفافل بھی ہے اور ورد بھی ہے۔ میری باتوں کو غور سے سنیے گا تا کہ میری باتوں پر آپ لوگ عمل کر سکیں ۔ آ سانی سے عمل کر سکیں۔ جس طرح سے میں نے آپ سے ذکر کیا کہ بدھ کے دن کے حوالے سے میں آپ سے ذکر کروں گی۔ اس دن کے وظائف آپ سے ذکر کروں گی جیسا کہ بدھ کے روز حضور اکرم ﷺ نے فر ما یا کہ بد ھ کا روز منحوس ہے لیکن کفار کے لیے۔ سید نا علی سیدنا جا بر سے روایت ہے کہ بدھ کا دن منحوس ہے اور حضرت عباس سے روایت ہے کہ مہینے کا آخری بدھ ہمیشہ منحوس ہوتا ہے۔ سیدنا عبداللہ بن عباس سے روایت ہے کہ مہینہ کا آخری بدھ دائمی یعنی ہمیشہ منحوس ہوتا ہے۔ سیدنا انس بن مالک سے روایت ہے

کہ رسول اللہ ﷺ سے بدھ کے دن کے متعلق دریافت کیا گیا تو ارشاد فر مایا کہ یہ دن منحوس ہے ۔ عرض کیا گیا کہ یہ کس طرح منحوس ہے آپ ﷺ نے ارشاد فر ما یا اللہ تعالیٰ نے اس دن فرعون کو غرق کیا اور آگ اور سمود کو ہلا ک کیا ۔ محل تیار کیے جاتے ہیں اور اس کے علاوہ بدھ کے روز میں ناخن تراشنے سے منع فر ما یا گیا کیونکہ اس سے مرض پھیلنے کا خطرہ ہوتا ہے۔ جو انسان بدھ کے روز کے روزے کا اہتمام کرتا ہے تو روزے تو جاری ہیں تو جو انسان بدھ کے روز لازمی روزہ رکھے تو اس کے لیے جنت میں محل تیار کیے جاتے ہیں۔ اور بدھ کے روز ناخن تراشنے سے منع فر ما یا گیا ہے لیکن حدیث جب ذکر کی جاتی ہے تو نبی کریمﷺ کی ذات کے ساتھ وہ خاص ہوتی ہے اور اگر کسی چیز سے منع کیا جائے تو فوراً ہٹ جا نا چاہیے اس چیز سے۔ کیو نکہ جو ر اوی ہوتا ہے وہ حضورِ اکرم ﷺ سے روایت کر رہا ہوتا ہے تو بد ھ کے دن جس کام کو کرنے کا حکم دیا جائے وہ کام ضرور کر یں اور جس کام سے منع کیا جائے اس کام سے رک جائیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *