بارہ شوال دوسرے سو موار کو یہ وظیفہ لازمی کر یں۔

آج ہم آپ کو اللہ کے دو اسمِ مبارک کی فضیلت خواص اور وظائف کے بارے میں بتائیں گے ۔ جتنے بھی وظائف ہیں در حقیقت وہ اللہ تعالیٰ کا ذکر ہے۔ اللہ تعالیٰ کے ذکر کی بہت زیادہ فضیلت ہے اللہ تبارک وتعالیٰ قرآن مجید میں سورۃ العمران آیت نمبر ایک سو اکانوے میں ارشاد فر ما تے ہیں جس کا ترجمہ ہے

یہ وہ لوگ ہیں وہ سراپا نیاز بن کر کھڑے اور سراپا ادب بن کر بیٹھے اور ہجر میں تڑپتے ہو ئے اپنی کروٹوں پر بھی اللہ کا ذکر کر تے رہتے ہیں۔ اور آسمان اور زمین کی تحلیق میں کار فر ما اس کی عظمت اور حسن کے جلو ؤں میں فکر کر تے رہتے ہیں پھر اس کی معرفت سے لذت آشنا ہو کر پکارتے ہیں اے ہمارے رب ! تو نے یہ سب کچھ بے حکمت اور بے۔ تد بیر نہیں بنا یا تو سب کو تاہیوں اور مجبوریوں سے پاک ہے پس ہمیں جہ نم کے ع زاب سے بچا لینا اسی طرح حدیثِ پاک میں بھی ذکر کی بہت زیادہ فضیلت بیان ہو ئی ہے حضرت ابو موسی ٰ ؓ‌ سےروایت ہے کہ حضور نبی کریم ﷺ نے فر ما یا اپنے رب تعالیٰ کا ذکر کر نے والے اور رب تعالیٰ کا ذکر نہ کر نے والے شخص کی مثال زندہ اور م ردہ کی سی ہے یعنی کہ جو شخص اللہ تعالیٰ کا ذکر کر تا ہے وہ زندہ ہے اور جو شخص اللہ تعالیٰ ذکر نہیں کر تا وہ م ردوں میں سے ہے وہ زندہ ہونے کےباوجود بھی م ر دہ ہے اسی طرح ذکر کی فضیلت بیان کر تے ہوئے ایک صحابی نے فر ما یا۔

کہ غفلت کی بجلیاں مومن اور غیر مومن دونوں پر گرتی ہیں لیکن اللہ تعالیٰ کا ذکر کر نے والے پر نہیں گر تیں یہ تھی ذکر کے بارے میں ایک آیت اور ایک حدیثِ مبارکہ اب ہم آپ کو رزق میں وسعت کے لیے رزق میں خیر و بر کت کے لیے کاروبار کے لیے بر کت کے لیے ایک خاص عمل بتا تے ہیں جو کہ اللہ تبا رک وتعالیٰ کے دو اسمِ مبارک یا باسطُ یا منعمُ کا ہے مگر اس سے پہلے ایک گزارش ہے کہ میری ان باتوں کو بہت ہی زیادہ غور سے سنیے گا تا کہ ان کو اس وظیفے سے بہت ہی زیادہ فائدہ حاصل ہو سکے۔ آپ کو۔ یا با سطُ جس کا مطلب ہے اے کشادگی کرنے والے۔ یا منعمُ جس کا مطلب ہے دولت مند مالدار نعمت دینے والا آپ نے ان دونوں اسمِ مبارک یا با سطُ یا منعمُ کو اکٹھا پڑھ کر ایک تصور کر نا ہے آپ نے اول و آخر اکیس مر تبہ درودِ ابراہیمی پڑھ کر درمیان میں گیارہ سو مر تبہ یا با سطُ یا منعمُ کا ورد کر نا ہے یہ آپ کسی بھی فرض نماز کے بعد کر سکتے ہیں۔ مگر بہتر یہ ہے کہ آپ نمازِ فجر کے بعد اس عمل کو کر یں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.