رمضان کا وہ وظیفہ جو حضرت محمد ﷺ بھی سارے وظیفوں کو چھوڑ کر ادا کرتے تھے۔

جو شخص رمضان المبارک میں ایک دفعہ کلمہ پڑھے اور جب محمدالرسول اللہ پر پہنچے تو اس کو دس لاکھ دفعہ پڑھے۔ یہ عمل پہلے رمضان کے پہلے روزے سے شروع کرنا ہے یعنی جس دن پہلا روزہ ہو سحری کھانے کے بعد ایک دفعہ کلمہ پڑھے لاالہ الااللہ اس کے بعد مسلسل محمدالرسول اللہپڑھنا شروع کردے۔

بس اس کے بعد پھر مسلسل محمدالرسول اللہ ہی پڑھے۔ اس عمل کو دس لاکھ دفعہ پڑھ لے اگر رمضان میں دس لاکھ پورا نہ ہوسکے کوشش کرے پورا کرلے اگر نہ ہوسکے تو اس کو رمضان کے بعد تک پورا کرلے۔ اس کے جو انوکھے کمالات انہوں نے بتائے خود میں حیران ہوگیا۔ اس کاپہلا فائدہ یہ بتایا کہ اس کو یقینی طور پر حضور اقدس ﷺ کی زیارت نصیب ہوگی‘ اسی رمضان میں ہوجائے گی یا زندگی میں مرنے سے پہلے انشاء اللہ ضرور ہوگی۔ اس کے دل میں عشق مصطفیٰ ﷺ ایسے آئے گا جیسے موجیں اور ٹھاٹھیں مارتا سمندر ۔اس کو سنت کی اتباع اور عمل نصیب ہوگا۔ قیامت کے دن حضورﷺ کی شفاعت یقینی یقینی یقینی (اس کو تین دفعہ دہرایا) نصیب ہوگی۔قیامت کے دن اس بندے کی آواز لگے گی اور اس کو آواز لگا کر بلایا جائے گا اس کے ساتھ معاملہ نرمی کا ہوگا‘ حساب و کتاب نرمی کا ہوگا اور فرمایا کہ اس بابرکت وظیفے کی رحمت اتنی ہے کہ اس کی مغفرت بغیر حساب کے ہوگی۔

جنت کا داروغہ رضوان فرشتہ اس کا استقبال کرے گا اور اسے ان لوگوں کے ساتھ جنت میں شامل کیا جائے گا جنہوں نےساری زندگی غلامی رسولﷺ میں گزاری تھی اور اسے جنت میں اعلیٰ مقام دیا جائے گا۔ جب وہ مرے گا اس کو کلمہ نصیب ہوگا‘ قبر میں اس کا چہرہ دائیں طرف رہے گا۔ منکر نکیر قبر میں جب اس سے سوال کریں گے تواللہ جل شانہٗ اس کی مدد فرمائیں گے۔ اس کے پڑھنے والےکے گھر کی فرشتے روزانہ زیارت کرنے آتے ہیں اور اس کو چومتے ہیں۔ جو شخص یہ پڑھے گااس کو منہ کا نور نصیب ہوگا‘ سینے کانور نصیب ہوگا‘ جسم کا نور نصیب ہوگا۔ اس کے پڑھنے والے کو دنیا میں ایسا نور نصیب ہوگا جس کو دیکھے گااُس کا دل نورانی ہوجائے گا اور جو اس کو پڑھے وہ گناہ سے بچے گا اللہ پاک اس کو لفظوں کا نور دے گا‘ آنکھوں میں نور دے گا جس پر نظر ڈالے گا اس شخص کے دل میں نور اتر جائے گا۔گناہوں سے بچنے کیلئے بہت اکسیر چیز ہے جو شخص ولایت چاہتا ہو‘ گناہوں سے بچنا چاہتا ہو‘ عشق مصطفیٰ ﷺچاہتا ہو اور بڑے بڑے ظالم گناہوں سے نجات چاہتا ہو اس کی زندگی میں ایسا وقار ایسی برکت اور ایسی رحمت آئے گی کہ خود اپنی زندگی سے حیران ہوجائے گا۔ اس کی نسلوں میں اللہ پاک رحمت جاری کرے گا‘ اس کی نسلیں گناہوں سے بچیں گی اور نسلوں کے اندر برکت رحمت اور خوشیاں ہوں گی۔

اس کی نسلیں معذور‘ لولی‘ لنگڑی اپاہج اندھی کانی نہیں ہوں گی۔ اس کی نسلوں میں گناہ منتقل نہیں ہوگا اور اللہ اس کی نسلوں کی غیب سے حفاظت فرمائیں گے۔شیطانی اور جناتی چیزیں اس سے ڈریں گی ہر شر دینے والی مخلوق خود اس کی حفاظت کرے گی حتیٰ کہ سانپ اور بچھو اس کے مطیع اور فرمانبردار بن جائیں گے۔ ہاں یہ بات بڑی اہم ہے کہ اس وظیفے کے ساتھ ساتھ گناہوں سے بہت زیادہ بچیں‘ جھوٹ سے بچیں اور رزق حرام سے بچیں! ورنہ پھر شکوہ نہ کریں۔اس وظیفے کے پڑھنے والے کو جنگل کے درندے روز یاد کرتے ہیں کہ آکر اپنی زیارت کراجاؤ ہم آپ کی خدمت کرنا چاہتے ہیں کیونکہ آپ کی زبان پر کلمے کا دوسرا بول ہے جس ہستی کو دیکھنے کو ہم ترستے ہیں اور دن رات ہم اس ہستی پر خود درود و سلام بھیجتے ہیں۔یہ شخص جب کہیں چلتا ہے فرشتے اس کے معاون بنتے ہیں‘ تکلیف دینے والی چیز سے اس کی حفاظت کرتے ہیں اور اس کے اردگرد نور بکھیرتے ہیں۔نیک صالح اور اولیاء جنات ہروقت اس کے ساتھ ہوتے ہیں بلکہ اگر اس کے قرب و جوار میں ایسے جنات رہتے ہیں تو وہ روز اس کی زیارت کرنے آتے ہیں۔ اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.