یرقان کی علا مات ، وجو ہات، پر ہیز اور دیسی علاج۔

آج ہم بات کریں گے یرقان کیا ہے یہ کیوں اور کیسے ہو تا ہے؟ اس کی علامات کیا ہیں اور اس کا علاج کیا ہے؟ تو میرے ساتھ رئیے۔ کیونکہ آج میں وہ تمام معلومات آپ کے ساتھ شئیر کر وں گی جو ہم میں سے اکثر لوگ نہیں جانتے۔ تو چلتے ہیں آج کی معلومات کی طرف۔ اس کے آخر میں میں آ پ کو پرہیز کے

بارے میں بھی بتاؤں گی تو سب سے پہلے یہ جان لیتے ہیں کہ یرقان کیا ہے یہ جگر کی ایک بیماری ہے جو جگر کی سوجن کی وجہ سے ہو تی ہے اس کی مختلف اقسام ہیں جیسے یرقان اے یرقان بی یر قان سی تو یہ مختلف اقسام ہیں۔ چند گھریلو ٹوٹکوں کے ذریعے یرقان کی شدت میں کمی لائی جا سکتی ہے۔یرقان کو پیلیا یا جوائنڈس بھی کہا جاتا ہے۔انسانی جگر جسم میں انتہائی اہم کردار ادا کرتا ہے جو کھانا ہضم کرنے کے ساتھ تمام ضروری غذائیت بھی جسم کو فراہم کرتا ہے۔ جب کہ جگر ہی خون میں پروٹین، چربی اور چینی کی سطح کو منظم کرتا ہے اور جسم میں جمع ہونے والے زہر کے خاتمے کے لیے مسلسل کام کرتا رہتا ہے لیکن جگر کی بہت سی بیماریاں بھی ہیں جن میں ہیپاٹائٹس اے، بی، سی، ڈی اور یرقان وغیر شامل ہیں، صحت مند رہنے کے لیے ان تمام بیماریوں سے بچنا انتہائی ضروری ہے۔ڈاکٹرز بھی جگر کو نقصان نہ پہنچانے کے لیے ایسی غذاوں سے دور رہنے کا مشورہ دیتے ہیں جو جگر کے لیے نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہیں لیکن خدانخواستہ اگر آپ جوائنڈس یعنی یرقان میں مبتلا ہو جائیں تو چند گھریلو ٹوٹکوں کے ذریعے اس بیماری سے باآسانی نجات حاصل کی جا سکتی ہے گنا ہاضمے کے لیے اچھا ہوتا ہے اور یہ جگر کے کام کو مزید بہتر بناتا ہے جب کہ روزانہ گنے کا ایک گلاس جوس پینے سے یرقان کا مریض تیزی سے اس مرض سے چھٹکارا حاصل کر سکتا ہے۔

ٹماٹر بھی انسان کے اندر خون بنانے میں مدد فراہم کرتا ہے اور اس کے اندر لیوپیین موجود ہوتا ہے جو جگر کی بیماریوں کا خطرہ کم کرتا ہے۔ صبح کے وقت ٹماٹر کے جوس کا ایک گلاس نمک اور مرچ ملا کر پیا جائے تو یرقان کا علاج جلد کیا جا سکتا ہےجوائنڈس سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لیے مولی کے پتوں کا استعمال بھی کارآمد ثابت ہو سکتا ہے کیوں کہ ان پتوں میں ایسے مرکبات ہوتے ہیں جو آنتوں کی نقل وحرکت کو بہتر کرتےہیں۔ روزانہ مولی کے پتوں کا رس نکال کر ایک گلاس پیا جائے تو یرقان کا علاج جلد ممکن ہے۔

لیموں میں سوزش کی املاک موجود ہوتی ہیں جو جوائنڈس سے نجات حاصل کرنے کے لیے سودمند ہوتی ہیں اور یہ جگر کے خلیات کو کسی بھی نقصان سے محفوظ رکھتا ہے اس لیے لیموں کا استعمال پیلیا سے چھٹکارا حاصل کرنے کا سب سے آسان گھریلو ٹوٹکا ہے۔پپیتوں کے پتوں کا پیسٹ بنا کر 2 ہفتوں تک مسلسل استعمال کرنے سے یرقان جیسی بیماری سے آسانی سے نجات حاصل کی جا سکتی ہے۔پالک میں لوہے کی مقدار کثرت سے موجود ہوتی ہے لہذا پالک کا جوس بھی جوائنڈس کے مریض کے لیے ایک موثر گھریلو علاج ہو سکتا ہے جب کہ پالک کے پتوں کے ساتھ گاجر کا استعمال بھی نہایت مفید ثابت ہو گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.