یَابَاسِطُ دس مر تبہ پڑھنے کے فوائد۔

آج ہم آپ کو اللہ کے ایک اسمِ مبارک یا با سطُ جس کا مطلب ہے کہ کہکشاں کی پیدا کرنے والے کی فضیلت کے بارے میں بتائیں گے مگر اس سے پہلے ہم ذکرِ اللہ کی فضیلت کے حوالے سے بات کر تے ہیں اللہ تبارک وتعالیٰ ارشاد فر ما تے ہیں جو لوگ ایمان لائے اور ان کے دل اللہ کے ذکر سے مطمئن ہو تے ہیں

جان لو کہ اللہ ہی کے ذکر سے دلوں کو اطمینا ن نصیب ہو تا ہے ذکر اللہ خیر کا خزانہ ہےا ور ہر طرح کی خیر کا خزانہ ہے اس میں آدمی جتنا چاہے آگے جا سکتا ہے۔ مگر کیسے؟؟؟ اس کے بارے میں حضرت ابراہیم ؑ نے ہمیں ایک مستند ذریعے سے پیغام دیا ہے یعنی آپ ﷺ کے ذریعے سے کہ اپنی اُمت سے کہہ دیں کہ جنت ایک میدان ہے اگر تم چاہتے ہو کہ اس میں درخت لگ جا ئیں تو ذکرِ اللہ کرو یہ جنت کے درخت ہیں سبحان اللہ کہنے سے درخت لگتا ہے الحمد اللہ کہنے سے درخت لگتا ہے لا الہ الا اللہ کہنے سے درخت لگتا ہے اللہُ اکبر کہنے سے درخت لگتا ہے یعنی ذکرِ اللہ کی کثر ت سے جنت کے درجات بلند ہو تے رہتے ہیں اس وجہ سے آپ ﷺ نے ارشادفر ما یا کہ تم نرم نرم بستروں پر ذکر کر نے والوں کو ذکر سے نہ روکو۔ بعض لوگ مالدار ہو تے ہیں اللہ تعالیٰ نے ان کو مال دیا ہوتا ہے اب جن کو مالدار پیدا کیا ہے تو ظاہر ہے کہ ان کے پاس سوفا سیٹ بھی ہوں گے اچھے اچھے بیڈ بھی ہوں گے کالین بھی ہوں گے یہ ساری چیزیں ہوں گی لیکن اگر وہ اللہ کو نہیں بھولتے اللہ کو یاد رکھتے ہیں

تو یہ چیزیں ماشاء اللہ ان کے لیے خیر کا ذریعہ بن رہی ہیں مثلاً ایک شخص ہے وہ شاکر ہے اللہ پاک نے اس کو گاڑی دی ہے۔ گاڑی میں بیٹھتا ہے تو کہتا ہے کہ تیرا بڑا شکر تو نے میرے لیے بڑی آسانی پیدا فر ما دی تو بیٹھتے ہی اس نے کمال لیا ہےا گر کوئی اس کی عزت کر تا ہے تو کہتا ہے کہ اے اللہ تیرا بڑا شکر ہے کہ تو نے مجھے بڑی عزت دی یہ کہنے پر اس کا کام بن گیا کھانا کھانے پر کہتا ہے کہ اے اللہ تیرا لاکھ لاکھ شکر ہے میرے مالک ۔ تو نے مجھے تیرے رزق سے نواز اا ور میری بھوک جو ہے وہ مٹا دی اورہ وہ ذکر اللہ تبارک وتعالیٰ کی بارگاہ میں قبول ہو تا ہے

تو اس وقت انسان کی زبان پر بے اختیار اللہ کا ذکر جاری ہو جاتا ہے وہ جو بھی کام کر تا ہے اس کے ساتھ اللہ کا ذکر کرتا ہے اس لیے جب بھی ذکر کر یں تو خوشی کے ساتھ کر یں یا باسطُ کا ایک چھوٹا سا اور آسان سا عمل بتاتے ہیں جس کی براکات بہت زیادہ ہیں۔ نماز ِ فجر کی دعا کے یا با سطُ دس مر تبہ پڑھ کر دونوں ہاتھ منہ پر پھیر لیا کر یں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.