یہ سورت اللہ پاک کو اتنی محبوب ہے کہ جو بھی شام کے وقت اس کو پڑھ لے گا

اس تحریر میں رزق میں برکت کے حوالے سے ایک ایسا خاص قرآنی عمل پیش کیاجارہا ہے کہ جس کو اگر میں اور آپ روزانہ کی بنیاد پر رات کو عشاء کی نماز ادا کرنے کے بعد کرلیتے ہیں تو انشاء اللہ اس عمل کی برکت سے اللہ رب العزت ہمارے تھوڑے رزق میں بھی برکت عطا فرمادیں گے جس کی بنا پر

انشاء اللہ ہمیں کسی قسم کی محتاجی یا غربت و تنگدستی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا عمل نہایت آسان اور مختصر سا ہے اللہ رب العزت نے اس انسان کو تخلیق کیا ہے اور اللہ نے ہی اس انسان کے اور کائنات میں جتنی بھی اللہ کی مخلوقات ہیں ان کے رزق کا ذمہ لے رکھا ہے اور اللہ رب العزت اپنی چاہت کے مطابق کسی کو وافر مقدار میں عطا فرماتے ہیں اور کسی کو کم مقدار میں عطا فرماتے ہیں اور کوئی ایسے بھی ہیں کہ جن کو اللہ رب العزت بہت زیادہ عطافرماتے ہیں اور کسی کو اللہ رب العزت غربت اور تنگدستی کا شکار کر دیتے ہیں یہ سب میرے اللہ کی قدرت ہے اور جہاں اللہ کی قدرت ہو وہاں انسان کچھ بھی نہیں کر سکتا انسان کو یہی کرنا چاہئے اور یہی سوچنا چاہئے کہ میرے لئے جو بھلا ہے میرے ساتھ وہی ہورہا ہے ان تمام امور میں چاہے

انسان کو اللہ رالعزت نے بہت عطا کررکھا ہو یا انسان کو اللہ نے تنگی اور محتاجی میں رکھا ہو ان تمام حالات میں ہمیں اللہ رب العزت کا شکر ادا کرنا چاہئے جس کو بہت عطا کررکھا ہے اس کو اللہ کا شکر ادا کرنا چاہئے کہ اللہ نے مجھے کس خوبی کی وجہ سے عطا کررکھا ہے مجھ میں کوئی خوبی نہیں ہے لیکن پھر بھی مجھے اللہ نے اس قدر عطا کررکھا ہے اور جس کا رزق اللہ نے تنگ کررکھا ہے اسے اس پر صبر کرنا چاہئے اور اللہ رب العزت سے مدد مانگنی چاہئے اللہ سے دعا کرنی چاہئے تا کہ اللہ پاک اس کے حالات کو بہتر فرما دے ۔عمل یہ ہے نہایت ہی آسان عمل ہے آپ نے کرنا یہ ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر نماز عشاء ادا کرنے کے بعد جائے نماز پر کھڑے ہوکر دو رکعت نماز نفل صلوۃ التوبہ کی نیت سے پڑھنے ہیں نفل نمازپڑھ کے پھر آپ نے اسی طرح وہیں جائے نماز پر بیٹھ کر اول آپ نے تین مرتبہ درود ابراہیمی پڑھنا ہے اس کے بعد سو مرتبہ یعنی ایک تسبیح اس دعا کی پڑھنی ہے ربنا اٰتِنا فی الدنیا حسنہ وفی الآخرۃ حسنہ وقنا عذاب النار اور اس دعا کو پڑھتے ہوئے

جب آتنا فی الدنیا کہیں تو دنیا کو اپنے سامنے رکھنا ہے کہ دنیا کی ہر قسم کی جو سہولت ہے وہ اللہ پاک مجھے عطا فرمائے اور جب وفی الاخرۃ حسنہ کا ذکر ہو تو اس پر ہم نے آخرت کو دیکھنا ہے کہ آخرت میں اللہ ہمیں کامیابی عطا فرمائیں اور قنا عذاب النار پر اللہ پاک سے پناہ مانگنی ہے اور پھر آخرت میں تین بار درود پاک پڑھ لینا ہے اور پھر دو نفل صلوۃ الحاجت کی نیت سے پڑھنے ہیں اور پھر سے وہیں جائے نماز پر بیٹھ کر تین مرتبہ درود ابرہیمی پڑھنا ہے اس کے بعد آپ نے آیت کریمہ بسم الرحمن الرحیم لاا لہ الا انت سبحانک انی کنت من الظالمین کو بھی 100 مرتبہ پڑھ لینا ہے اور آخر میں دوبارہ سے تین مرتبہ درود ابراہیمی پڑھ کر اللہ رب العزت کی بارگاہ میں دعا کرنی ہے ۔اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو ۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *