حضرت علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا: رمضان افطاری کے وقت جمعہ کے دن یہ ضرور پڑھ لو

ہم کتنے زیادہ خوش نصیب ہیں کہ اللہ پا ک نے اپنے حبیب نبی کریم ﷺ کے صدقے ہمیں رمضان میں جمعہ کی نعمت سے نوازا۔ ہمیں اس پر اللہ تعالیٰ کا بہت شکر ادا کرنا چاہیے ۔ جمعہ یوم عید ہے۔ جمعہ سب دنوں کا سردار ہے۔ جمعہ کے دن جہنم کی آگ نہیں سلگائی جاتی ۔ جمعہ کے رات دوزخ کے دروازے نہیں کھلتے ۔

جمعہ کے دن بروز قیامت اٹھایاجائےگا۔ جمعہ کے روز مرنے والا خوش نصیب مسلمان کا رتبہ پاتا ہے۔اور ع ذاب قب ر سے محفوظ ہوجاتا ہے جمعہ کے روز حج ہوتو اس کا ثواب ستر حج کے برابر ہے۔ جو رمضان المبارک میں آئے اس میں ایک لفظ پڑھنے کا ثواب ایک سو چالیس گنا زیادہ بڑھ جاتاہے۔
حضور اکرم ﷺ کی حدیث ہے کہ : بلاشبہ جمعہ کے دن ایک ایسی گھڑی ہے جس میں کوئی بندہ اللہ سے کچھ بھی مانگے اللہ تعالیٰ اسے عنایت فرماتاہے۔ صحابہ کرام نے پوچھا یہ گھڑی کونسی ہے؟ آپ ﷺ نے فرمایا: نماز کھڑی ہونےسے لے کر نماز ختم ہونے تک ۔ دوسرا قول یہ فرمایا کہ یہ گھڑی عصرکے بعد ہے۔ جو لوگ علم سے وابستہ ہیں ان کا ہر کام علوم کا محتاج ہوتاہے رزق کی تنگی ہو۔ یا شادی میں رکاوٹ ہو یا بندش کا سامنا ہو۔ یا جادوصفلی اثرات یاتعویذ ات کے افراد کا سامنا ہو۔ اولاد نرینہ کے حصول جیسے مسائل ہوں۔

تو اس کے لیے ماہ رمضان کے جمعہ کا دن یہ عمل بہت ہی فائدہ مند ہے۔ جب انسان ہر طر ف سے مایوس ہوجاتا ہےاور اس کو دور دور تک کوئی راستہ نظر نہیں آرہا ہوتا۔ کیسے میری پریشانی دورہوجائے گی کیسے میری مصیبت ختم ہوگی۔ انسان اپنے رشتوں میں بہت سے ایسے رشتوں پر امید لگا لیتا ہے کہ مشکل وقت پر فلاں دوست یا فلاں رشتہ دار کام آئے گا۔ جب وقت آتا تو کوئی بھی نظر نہیں آتا۔ اس وقت حضر ت علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا: کہ انسان کو ایسے وقت میں مایوس نہیں ہونا چاہیے۔ اپنا بھروسہ اللہ کی ذات پررکھنا چاہیے ۔ اپنے دل کے دکھڑے اسی ذات کو سنانے چاہیں۔ مارہ رمضان کا جمعہ جیسے ہی آجائے افطاری سے پہلے پہلے انسا ن کی جو پریشانی ہو۔ جو مصیبت ہو۔ ہر پریشانی اور مصیبت کو سامنے رکھتے ہوئے اپنا مسئلہ اولا د کا ہو یا جھولی بھرنے کا ہو۔

آپ نے اپنا مسئلہ سامنے رکھتے ہوئے اللہ تعالیٰ کےتین نام مبارک “یا رحیم ، یا کریم ، یا معیز” ستائیس بار پڑھنے ہیں اور اللہ تعالیٰ سے دعا کرنی ہے۔ انشاءاللہ! یہ عمل کرنے کی دیر ہوگی۔ آپ اپنی آنکھوں سے دیکھیں گے ۔ کہ اس ایک دن اس عمل کی برکت کی وجہ سے اللہ تعالیٰ آپ کی اسی ہزار حاجتیں قبول فرمائے گا۔ اس دن اللہ جو بادشاہوں کا بادشا ہ ہے۔ وہ یہ نہیں دیکھے گا کہ تیری یہ دعا قبول کروں یا نہ کروں۔ تو اسی ہزار حاجتیں بھی مانگیں گا۔ تو تیرے مانگنے میں دیر ہوگی۔ اس کے عطاکرنے میں کوئی دیر نہیں ہوگی۔ ایک بھائی نے ہمیں لکھا کہ میرے بیوی کے پیٹ میں دو رسولیاں تھیں۔ ڈاکٹر نے آپریشن تجویز کیا تھا۔ میرے بیگم نے یہ عمل کیا ۔ جس کے اللہ کے فضل وکرم سے اس کے پیٹ کی رسولیاں بالکل ختم ہوگئیں۔ میرا مکمل یقین ہے کہ اس عمل کو جس پریشانی کےلیے بھی کیاجائے وہ ضرور حل ہوجائے گی۔ جس مراد کے لیے بھی کیاجائے وہ مراد پوری ہوجائے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *