رمضان کا دوسرا عشرہ ختم ہونے سےپہلے یہ چھوٹی سی سورت تین بار پڑھیں

آج آپ کے ساتھ ایک ایسا عمل بتائیں گے جس کو آپ نے رمضان کے دوسرے عشرے ختم ہونے تک کرتے رہناہے۔ آج کو وظیفہ قرآنی سورت پر منحصر ہے اور قرآنی آیات اور قرآنی سورتیں اسمائے اعظم بہت ہی زیادہ پرتاثیر اور مفید ہیں۔ بہت زیادہ فضیلت والی کتا ب ہے قرآن پاک اللہ تعالیٰ نے ہم مسلمانوں کے لیے

ہدایت کا سرچشمہ بنا کر بھیجاہے۔ قرآن پاک میں مسلمانوں کی ہر مشکل کاحل ہے۔ ہرمصیبت سے نجات کا حل ہے۔ اگر ہم قرآ ن پاک کو صیحح معنوں میں سمجھ کر پڑھیں۔ تو ہمیں کسی سے دعاکرانے کی ضرورت ہی نہ پڑے۔ کیونکہ اللہ تعالیٰ نے قرآن پاک میں ہربیماری سے نجات کا حل رکھا ہے۔ ہرمشکل سے نجات کا حل رکھا ہے یعنی ہر مسئلے کاحل رکھا ہے۔ آپ نے رمضان المبار ک کا دوسرا عشرہ ختم ہونے تک اس عمل کو روزانہ کرنا ہے کر نا آپ نے یہ ہے کہ آپ نے چاررکعت نوافل اس ترتیب سے کرنے ہیں ۔ کہ ہررکعت میں “الحمدا للہ” کے بعد ایک مرتبہ ” سورت التکاثر ” اور تین مرتبہ ” سورت اخلاص ” پڑھنی ہے۔ اور پھر رکوع و سجودمیں چلے جانا ہے اورپھر دوسر ی رکعت میں “الحمدا للہ” کے بعد ایک مرتبہ ” سورت التکاثر ” اور تین مرتبہ ” سورت اخلاص ” پڑھنی ہے۔اور اسی ترتیب سے آپ نے دوسرے دو نوافل ادا کرنے ہیں۔ چار نوافل آپ نے ایک سلام کے ساتھ پڑھنے ہیں۔

جب آپ نوافل ادا کرلیں۔ تو پھر آپ نے اسی جگہ بیٹھ کر ایک سو مرتبہ ” یا حسیب، یا رزاق، یا غنی ” کا ورد کرنا ہے۔ ان تینوں اسمائے اعظم کو اکٹھا کر ایک تصور کرناہے۔ اور اسی ترتیب سے اور اسی طریقہ کار سے ایک سو مرتبہ ان کلمات کو پڑھ کر ، اول وآخر گیارہ گیارہ مرتبہ درود پاک پڑھ کر بارگاہ الہی ٰ میں خصوصی دعاکرنی ہے۔ اس عمل کو آپ نماز مغرب یا نماز عشاءاد ا کرنے کے بعد کرسکتے ہیں۔ اگر آپ نمازمغر ب اور نماز عشاء کے بعد ان نوافل کو نہیں پڑھ سکتے ۔ تو پھرآپ ان نوافل کو تہجد کے وقت پڑھیں۔ تہجد کے وقت نوافل پڑھنے کی فضیلت بہت زیادہ ہے۔ اگر تہجد رمضان میں پڑھی جائے تواللہ کریم اس بندے کی طرف دیکھ کر مسکراتا ہے اللہ تعالیٰ ہم گناہگاروں کی طرف دیکھ کر مسکرائے ۔ اس سے بڑھ کر ہماری کامیابی اور کیا ہوسکتی ہے۔

اللہ ہم گن اہوں گاروں سے راضی ہوجائے ۔ اللہ ہم سے خوش ہوجائے ۔ اس سے بڑھ کر ہم مسلمانوں کے لیے اور کیا بات ہوسکتی ہے۔ گزارش ہے کہ رمضان المبارک ختم ہونے تک نماز تہجد کا اہتمام لازم کریں۔ چاہے تو نماز تہجد میں چار رکعت نوافل پڑھ لیں۔ چھ رکعت پڑھ لیں ۔ آٹھ رکعت پڑھ لیں۔ یہ آپ کی اپنی مرضی اور ہمت ہے۔ جتنی آپ ہمت اور استطاعت رکھتے ہیں۔ اتنے ہی آپ نماز تہجد کے نوافل ادا کریں ۔ وظائف کرکے اللہ تعالیٰ سے دعائیں کریں ۔ یہ ایسا وقت ہوتا ہے کہ اللہ تعالیٰ اپنے بندے کو پکار پکار کر کہتاہے اے میرے بندے ! مجھے سے مانگ جو مانگنا ہے۔ میں تجھے اسی وقت عطا کروں گا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *