چودہ رمضان وضو کے دوران صرف 1 دعا پڑھ لو

بڑوں کے لیے حِفاظت کا وَظیفہ یہ ہے کہ جب وہ وُضو کریں تو ہر عُضو دھوتے وقت ایک بار یَا قَادِرُ پڑھ لیا کریں مثلاًجب وُضو شروع کریں تو سیدھا اور اُلٹا ہاتھ دھوتے ہوئے ایک بار یَا قَادِرُ پڑھ لیں ، اِسی طرح جب ایک بار کلی کر لیں تو دوسری بار کلی کرنے سے پہلے ایک بار یَا قَادِرُ پڑھ لیں ، پھر جب ایک بار ناک میں پانی چڑھا لیں

تو اب رُک جائیں اور ایک بار یَا قَادِرُ پڑھ کر مزید دو بار ناک میں پانی چڑھا لیں ۔ اِسی طرح ہر عُضو دھوتے اور سر کا مسح کرتے وقت ایک بار یَا قَادِرُ پڑھ لیں ، اس کے ساتھ ساتھ دُعائیں بھی پڑھی جا سکتی ہیں مگر دُعاؤں کی جگہ دُرُود شریف پڑھنا افضل ہے لہٰذا دُرُود شریف پڑھ لیا جائے ۔ اگر لوگ اِس طرح اِحتیاطیں بَرتیں گے اور اَوراد و وَظائف پڑھیں گے تو اِنْ شَآءَ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ بہتریاں آئیں گی ۔بیسن پر وُضو کرتے ہوئے یَا قَادِرُ پڑھنا کیسا؟کیا واش روم میں بیسن پر وُضو کرتے ہوئے بھی یَا قَادِرُ پڑھ سکتے ہیں؟ آج کل پیسے والے لوگوں کے گھر وں میں آسائشوں کا پورا اِنتظام ہوتا ہے اور زبردست ڈیکوریشن ہوتی ہے ۔ اِسی طرح متوسط یعنی دَرمیانے طبقے کے لوگوں اور جو صِرف نام کے غریب ہوتے ہیں ان کے گھروں میں بھی ڈیکوریشن اور سجاوٹیں ہوتی ہیں مگر وُضو خانہ نہیں ہوتا ۔

دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے وابستہ لوگوں میں سے بھی کسی کسی کے گھر وُضُو خانے کا اِہتمام ہوتا ہے حالانکہ گھروں میں وُضو خانہ بنانے کی بارہا تَرغیب دِلائی گئی ہے اور راہ نُمائی کے لیے مکتبۃ المدینہ کا شائع کردہ وُضُو کا طریقہ نامی رِسالے میں وُضو خانے کا نَقشہ بھی چھاپا گیا ہے ۔ عام طور پر گھروں میں بیسن پر وُضو کیا جاتا ہے اور بیسن واش روم کے ساتھ بنا ہوتا ہے ۔ یاد رَکھیے !اگر بیسن واش روم کے ساتھ بنا ہو تو وُضو کرتے ہوئے یَا قَادِرُ اور وُضو کرنے سے پہلے بِسْمِ اللہ نہیں پڑھ سکتے ۔ چونکہ وُضو سے پہلے بِسْمِ اللہ پڑھنا مستحب ہے اور فقط اللہ پاک کا نام لینا سُنَّتِ مؤکدہ ہے ۔ اس لیے واش روم میں لگے ہوئے بیسن پر وُضو کرنے کے باعِث اگر اسے چھوڑنے کی عادت بنائیں گے تو گناہ گار ہو جائیں گے لہٰذا ایسی صورت میں بِسْمِ اللہ پڑھنے کے لیے واش روم سے باہر نکلنا ضَروری ہو جائے گا ۔

بچوں کی حِفاظت کا وَظیفہ یہ ہے کہ اَوّل و آخر ایک بار دُرُود شریف اور گیارہ بار یَا حَافِظُ یَا حَفِیْظُ پڑھ کر اگر بچوں پر دَم کر دیا جائے تو حِفاظت کا حِصار مِل جائے گا اور اِنْ شَآءَ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ کوئی انہیں اِغوا نہیں کر پائے گا ۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ مجلسِ مکتوبات و تعویذاتِ عطّاریہ کے تحت ملک و بیرونِ ملک سینکڑوں بلکہ ہزاروں بستے قائم ہیں اور عالَمی مَدَنی مَرکز فیضانِ مدینہ بابُ المدینہ میں بھی بستہ قائم ہے لہٰذا تعویذاتِ عطّاریہ کے بستوں سے حِفاظت کا تعویذ حاصِل کر کے بچوں کو پہنا دیا جائے تاکہ اگر کوئی انہیں اِغوا کرنا چاہے تو اس وقت انہیں چیخ و پُکار یاد آ جائے اور وہ چیخنا پُکارنا شروع کر دیں یا اللہ پاک اُن کی مدد کے لیے کسی کو بھیج دے اور اِغوا کرنے والے اُسے دیکھ کر بھاگ جائیں یا اِغوا کرنے کے لیے جب وہ بچوں کی طرف ہاتھ بڑھائیں تو اُن پر خوف طاری ہو جائے اور وہ اُلٹے پاؤں بھاگ کھڑے ہوں تو تعویذ کی بَرکت سے اللہ پاک کی طرف سے اس طرح کے اَسباب پیدا ہو سکتے ہیں اور یوں تعویذ کے ذَریعے بچوں کی حِفاظت کی صورت بن سکتی ہے ۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *