افطار کے وقت 11 بار یہ 2 اسم مبارک پڑھ لیں اللہ سے جو بھی مانگو گے وہ مل کر رہے گا

حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ پر درود و سلام پڑھا کرو یہ نہایت عمدہ اور اعلیٰ پایہ عمل درودِ پاک پڑھنا جس کے بارے میں فر ما یا گیا جو شخص ایک مر تبہ درودِ پاک پڑھتا ہےا للہ اس کے لیے دس عافیت کے دروازے کھول دیتا ہے تو یہ اتنا با برکت عمل ہے اور آج جو وظیفہ ہم آپ کے لیے لے کر آئے ہیں

یہ وظیفہ آپ نے رمضان المبارک میں کر نا ہے افطار کے وقت اور یہ بنیادی طور پر ایک آیتِ مبارکہ ہے جس کو آپ نے گیارہ مر تبہ پڑھنا ہے اور یہ جب آپ گیارہ مر تبہ اس آیت مبارکہ کو پڑھیں گے تو اللہ آپ پر دین دنیا آ خ رت کی بھلا ئیاں اور رحمتیں جو ہیں وہ آپ پر برسائے گا۔رحمتوں کے نزول کے لیے یہ وظیفہ ہے نہایت مجرب نسخہ ہے اس نسخے پر آپ نے عمل کر نا ہے یہ خوبصورت آیتِ مبارکہ جو ہے وہ سورۃ المائدہ سے یہ آیت کیا ہے اس کے بارے میں بتاتے بھی ہیں یہ آپ نے پڑھنی ہے رمضان کے اندر رمضان میں جب آپ اس آیت مبارکہ کا ورد کر یں گے اس کا آ پ لگاتار وظیفہ کر یں گے تو ایک سو یہ جو آیتِ مبارکہ ہے یہ آپنے افطار کے وقت پڑھنی ہے

اور گیارہ مرتبہ پڑھنی ہے اس کو گیارہ مر تبہ پڑھناہے اور افطار کے وقت پڑھنا ہے یہ رمضان المبارک جو ہے بہت ہی با بر کت مہینہ ہے۔اس کا اندازہ اس بات سے لگا یا جا سکتا ہے کہ رمضان کی جب پہلی رات ہو تی ہے تو شیاطین کو بند کر دیا جا تا ہے اور مضبوط باندھ دیا جا تا ہےا ور سر کش جنوں کو بھی بند کر دیا جا تا ہے اور ج ہ ن م کے دروازے بند کر دئیے جا تے ہیں اور جنت کے دروازے کھول دئیے جا تے ہیں اور اس کا کوئی بھی دروازہ بند کر دیا جا تا ہے۔ روزہ دار کے منہ کی بو مشک کی بو سے زیادہ پسندیدہ ہے روزہ دار اللہ کا محبوب ہو جا تا ہے اس کی بو بھی اللہ کو پسند آتی ہے رمضان کے اس مبارک مہینے کی ان تمام فضیلتوں کو دیکھتے ہوئے مسلمان کو خاص اہتمام کر نا چاہیے اور کو ئی بھی لمحہ ضائع

نہیں کر نا چاہیے۔اس ماہِ مبارک میں عبادت کر نی چاہیے ۔ انسان اس عبادت کے ساتھ اپنی تمام ضروریات میں مصروف رہ سکتا ہے ۔ یہ آیت آپ نے گیارہ مر تبہ پڑھنی ہے۔ افطار میں پڑھنی ہے یہ سورۃ المائدہ کی ایک سو چودہ ہے۔ آیت نمبر ایک سو چودہ ہے سورۃ المائدہ کی آیت ِ مبارکہ جو ہے وہ ایک سو چودہ نمبر جو ہے وہ آپ نے تلا وت فر ما نی اور تلاوت آپ نے افطار کے وقت فر ما نی ہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *