گلیسرین میں یہ چیز ملائیں ایسی کریم تیار ہو گی جو رات میں آپ کے ہاتھ پاؤں دودھ جیسے سفید کر دے گی

موسم سرما کی سب سے اچھی موسچرائزنگ کریم تیار کیجئے چہرے سے لے کر پاؤں تک اور کسی بھی جسم کے حصے پر استعمال کی جاسکتی ہے اسے کولڈ کریم بھی کہا جاسکتا ہے ہاتھ پاؤں کی جلد سردیوں میں پھٹنے لگتی ہے تو یہ موسچرائزنگ کریم آپ کے ہاتھ پاؤں کو بے حد سافٹ بنادے گی بازاری بے

حد مہنگی مہنگی کریمز خریدنے سے پہلے ایک بار اس کریم کو ضرور آزمائیے انشاء اللہ بہت مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔ایک صاف پیالی لیجئے اور ایک چمچ ناریل تیل ڈالئے اس میں اینٹی ایجنگ پراپرٹیز موجود ہوتی ہیں اور اس سے سکن میں ٹائٹنیس پیدا ہوگی اور پھر اس میں آدھا چمچ گلیسرین شامل کیجئے گلیسرین سے کٹی پھٹی جلد ریپئر ہوگی اور سافٹ اینڈ سموتھ ہوجائے گی۔ اب آدھا چمچ بادام آئل شامل کیجئے اس سے موسم سرما کی کھوئی ہوئی چمک بحال ہوگی۔اب اس میں ایک چمچ ایلوویرا جیل شامل کیجئے اس سے سکن کی دلکشی اور فیئر نیس بڑھے گی ۔اب اس میں چار سے پانچ قطرے لیمن آئل شامل کیجئے یہ سکن کو نیچرلی بلیچ کر کے رنگت نکھارے گا۔اب ان تمام اجزاء کو اچھی طرح مکس کر لیجئے اور موسم سرما کی یہ انتہائی موسچرائزنگ کریم تیار ہے جو کہ خشکی کو بالکل ختم کرے گی.

اور آپ کی سکن کو بے حد موسچرائزنگ بنائے گی۔رات کو سونے سے پہلے اپنے چہرے گردن ہاتھ پاؤں پر لگائیے اور صبح اٹھ کر صابن سے اپنی سکن واش کر لیجئے ۔یہ کریم دن میں بھی استعمال کی جاسکتی ہے۔اس کو ہفتے میں تین بار استعمال کیجئے ۔فریج میں بھی سٹور کی جاسکتی ہے۔بہت ہی زبر دست نتائج حاصل ہوں گے۔یوں تو گلیسرین بہت سی چیزوں میں کارآمد ہے لیکن سردیوں میں اسکا استعمال جلد کی خوبصورتیکو بڑھانے کے لیے بھی بہت فائدہ مند ہے ۔عام طور پر گلیسرین جلد کو نمی فراہم کرنے کے لیے استعمال کی جاتی ہے لیکن اس کے فوائد اس سے کہیں زیادہ ہیں ۔جلد کی خوبصورتی کے لیے گلیسرین کو کئی طرح استعمال کیا جاسکتا ہے۔گلیسرین رنگ کو گورا کرتی ہے۔گلیسرین سے بنایا گیا فیس ماسک رنگت کو نکھارنے کے ساتھ داغ دھبوں کو صاف کرتا ہے ۔لیموں ، گلیسرین اور عرق گلاب برابر کی مقدار میں لے کر ملالیں رات کو سونے سے پہلے چہرے پر کچھ منٹ کے لیے ملیں ۔ ساری رات لگا رہنے دیں صبح اٹھ کر چہرہ دھولیں ۔خشک اور کھردری جلد کو آرام پہنچاتی ہے:خشک جلد (جو سردیوں میں اور تکلیف دہ بن جاتی ) کو آرام پہنچانے کے لیے ملک کریم میں گلیسرین شامل کر کے چہرے پر لگائیں ۔ دس منٹ بعد نیم گرم پانی سے دھولیں ۔ چہرے کی جلن میں بہت کمی آئے گی۔موائسچرائزر کے طور پر استعمال کریں:جلد کو نمی فراہم کرنے کے لیے گلیسرین کو موائسچرائزر کے طور پر استعمال کریں ۔

گلیسرین کو کریم ، باتھ جیل یا سادے پانی میں شامل کر کے چہرے پر لگائیں ۔ اس کے علاوہ عرق گلاب اور گلیسرین ملا کر لگانا کسی کریم سے بھی زیادہ بہتر ثابت ہوگا۔گلیسرین کو بیسن اور صندل پاؤڈر کے ساتھ ملا کر پیسٹ بنائیں اور چہرے پر لگائیں ۔ بیس منٹ تک لگا رہنے دیں پھر اچھی طرح دھولیں ۔ جلد چمکدار اور ترو تازہ ہوجائے گی ۔ ہفتے میں دو مرتبہ استعمال کر سکتے ہیں۔جھریوں دور کرنے کے لیے:گلیسرین کو بادام کے تیل میں ملا کر روزانہ چہرے کا مساج کریں ۔ اس کے علاوہ گلیسرین میں مچھلی کا تیل یا وٹامن ای آئل بھی ملایا جاسکتا ہے ۔گلیسرین کی نون ٹوکسک خصوصیت کی وجہ سے اس جلد کے لیے استعمال ہونے والی کسی بھی چیز میں ملا کر لگایا جاسکتا ہے۔گلیسرین میں جلد کی نمی برقرار رکھنے کی صلاحیت موجود ہے۔ چہرہ دھونے کے بعد گلیسرین پانی میں ملا کر چہرے پر لگالیں

۔ اس طرح آپ کی جلد کی نمی برقرار رہے گی ۔مہاسوں پر لگائیں:اپنی اینٹی بیکٹیریل خصوصیات کی وجہ سے گلیسرین کو مہاسوں کے علاج کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے ۔ مہاسوں اور ان کے نشانات جلد ختم کرنے کے لیے ان پر گلیسرین لگائی جاسکتی ہے اس کے علاوہ منہ کے چھالوں کے لیے بھی گلیسرین تیزی سے اثر دکھاتی ہے۔تین چمچ کچا دودھ ایک چمچ گلیسرین میں شامل کریں اور روئی کی مدد سے چہرے ہر لگائیں ۔ اچھی طرح مل کر دھولیں پھر دوبارہ چہرے پر لگائیں اور رات بھر کے لیے چھوڑ دیں ۔گلیسرین کے ساتھ کینو کا رس بھی شامل کر کے کلینزر کے طور پر استعمال کیا جاسکتا ہے۔داغ دھبوں سے پاک اچھی رنگت کے لیے یہ کلینزر بہترین ہے۔ملتانی مٹی ، بادام کا پاؤڈراور گلیسرین ملا کر ماسک تیار کریں ۔ متا ثرہ جگہ پر (جہاں بلیک یا وائٹ ہیڈ ہوں) لگائیں۔ 30 منٹ کے لیے لگا رہنے دیں اتارتے وقت ہلکے ہلکے رگڑ کر صاف کریں تاکہ بلیک ہیڈ زآسانی سے باہر آجائیں۔گلیسرین اینٹی فنگل خصوصیات کی بناء پر سر کی خشکی کا بھی خاتمہ کرتی ہے ۔ گلیسرین میں چند قطرے تیل یا پانی ملا کر بالوں کی جڑوں میں لگائیں ۔ گلیسرین کو کنڈیشنر کے طور پر بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔بالوں کے سرے پھٹ جائیں یا دو منہ ہوجائیں تو گلیسرین ان کے لیے بھی مفید ہے۔ اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *