چھ رمضان کا وظیفہ چھوٹی سی آیت پڑھیں آنکھ جھپک۔نے سےپہلے دولت پاس ہوگی

حضور اکرمﷺ کا ارشاد ہے کہ : جو بندہ مجھ پر ایک بار درود پاک پڑھتا ہے ۔ اللہ تعالیٰ اس پر دس رحمتیں نازل فرماتا ہے۔ اور دس درجات بھی بلند فرمادیتا ہے۔ رمضان المبارک کی اتنی زیادہ فضیلتیں ہیں۔ اتنی زیادہ برکتیں ہیں۔ کہ ماہ رمضان پر تو ہم قربان ہی جائیں ۔ اعتکا ف تو رمضان المبارک کی صرف ایک عبادت ہے

ورنہ سارے کا سارا رمضان المبارک عبادتوں ، رحمتوں اور برکتوں کی کان ہے۔ اللہ تعالیٰ کا اپنے پیارے پیارے آخری نبی کی امت پر ایک بہت بڑا احسا ن ہے۔ کہ اس نے ماہ رمضان جیسی عظیم الشان مہمان ہمیں عطافرمایا ہے۔ رمضان المبارک کی اہمیت کے لیے یہی ایک فرمان مصطفی ٰ ﷺ کافی ہے۔ کہ اگر بندوں کو معلوم ہوتا کہ رمضان کیا ہے ؟ تومیری امت تمنا کرتی کہ کاش پورا سال رمضان ہی ہوتا۔ ہر گھڑی رحمت بھری ہے ہرطرف برکتیں ہیں ۔ ماہ رمضان رحمتوں اور برکتوں کی کان ہے۔ ماہ رمضان کے فیضان کے کیا کہنے ۔ کہ اس کی ہر ساعتوں رحمت بھری ہے۔ رمضان میں ہر نیکی کا ثواب ستر گ۔نا یا اس سے زیاد ہ ہے ۔ نفل کا ثواب فرض کے برابر

اور فرض کا ثواب ستر گ۔نا کردیا جاتا ہے۔ ایک ایسا وظیفہ بتانے جارہے ہیں۔ یہ ایک قرآن پاک کی ایک چھوٹی سورت ہے۔ قرآن پاک کی چھوٹی سی سورت اس کو آپ نے پڑھنا ہے۔ تو جیسے ہی یہ وظیفہ کریں گے ۔ اب یہ موقع بار بار نہیں آئے گا۔ اب یہی موقع ہے فوری طور پر عمل کرلیں۔ چھ رمضان المبارک آچکا ہےاور اس کا وظیفہ آپ کے سامنے حاضر ہے۔ آپ نے کیا کرنا ہے ؟ آپ نے قرآن پا ک کی آخری سپارے یعنی تیسویں سپارے کی سورت ” سورت النصر” پڑھنی ہے۔ یہ مدنی سورت ہے اس کو آپ نے پڑھنا ہے۔ اور اس کو کتنی مرتبہ پڑھنا ہے اور کس وقت پڑھنا ہے جب چھ رمضان المبارک آئے تو آپ نے دن کے کسی بھی حصے میں کوئی بھی خاص وقت درکا رنہیں ۔ آپ نے کسی بھی دن کے حصے میں ایک جگہ پر بیٹھ

جائیں ۔ کوئی بھی آپ کے آس پا س موجو د نہ ہو۔ اور آپ نے تسبیح کو ہاتھ میں رکھنا ہے۔ سب سے پہلے آپ نے ” یا اللہ ” کو سومرتبہ پڑھناہے۔ اور پھر آپ نے قرآن پاک کی سورت ” سورت النصر” کو صرف اور صرف گیارہ مرتبہ پڑھناہے۔ پوری سورت ” بسم اللہ ” کو پڑھ کر پھر آپ نے یہ پوری سورت پڑھنی ہے۔ اس کو گیارہ مرتبہ پڑھنے کے وقت آپ نے افطار ی کے وقت دعامانگنی ہے۔ اب افطاری کے وقت کیوں مانگنی ہے؟ کیونکہ اس وقت دعا قبول ہوتی ہے او ریہ دعا کی قبولیت کا وقت ہوتا ہے۔ اللہ تعالیٰ سے آپ مانگ لیں۔قرض اپنا ختم کرناچاہتےہیں۔ تو مانگ لیں۔ رزق مانگ۔نا چاہتے ہیں تو مانگ لیں۔ اپنا گھر اور کاروبار اور دولت کو چمکانا چاہتے ہیں تو جتنا ہو سکے آج مانگ لیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *