رمضان کے پہلے عشرے میں 313بارپڑھیں برکتیں ، راحتیں ،خوشحالیاں سب ملیں گی

اللہ تعالیٰ نے ہمیں ماہ رمضان کا مہینہ نصیب فرمایا اور ہمیں ایک بار پھر سے جنت کی طلب جہنم سے آزادی اور مغفرت سمیٹنے کا موقع عطاء فرمایا یہی وجہ ہے کہ جو شخص اس مہینہ میں کسی نیکی کیسا تھ اللہ تعالیٰ کا قرب حاصل کرتا ہے وہ ایسا ہے جیسا کہ غیر رمضان میں فرض ادا کرلیا ہو اور جو

شخص اس مہینہ میں کسی فرض کو ادا کرے وہ ایسا ہے جیسا کہ غیر رمضان میں ستر فرض ادا کیے ۔ یہ مہینہ صبر کا مہینہ ہے اور صبر کا بدلہ جنت ہے اور یہ مہینہ لوگوں کیساتھ غم خواری کرنے کا ہے اس مہینہ میں مؤمن کا رزق بڑھا دیا جاتا ہے ۔اے لوگوں! تم پر ایک عظمت اور برکت والا مہینہ سایہ فگن ہورہا ہے۔ اس مبارک مہینہ کی ایک رات (شب قدر) ہزار مہینوں سے بہتر ہے، اس مہینے کے روزے اللہ تعالیٰ نے فرض کیے ہیں اور اس کی راتوں میں بارگاہِ خداوندی میں کھڑا ہونے(یعنی ترایح پڑھنے) کو نفل عبادت مقرر کیا ہے۔ جو شخص اس مہینے میں اللہ کی رضا اور اس کا قرب حاصل کرنے کے لیے کوئی غیر فرض عبادت ادا کرے گا تو اس کو دوسرے زمانے کے فرضوں کے برابراس کا ثواب ملے گااور اس مہینے میں فرض ادا کرنے کا ثواب دوسرے زمانے کے ۷۰؍فرضوں کے برابر ہوگا۔ یہ صبر کا مہینہ ہے اور صبر کا بدلہ جنت ہے۔ یہ ہمدردی اور غمخواری کا مہینہ ہے

اور یہی وہ مہینہ ہے جس میں مومن بندوں کے رزق میں اضافہ کیا جاتا ہے۔ جس نے اس مہینے میں کسی روزہ دار کو(اللہ کی رضا اور ثواب حاصل کرنے کے لیے) افطار کرایاتو اس کے گن اہوں کی مغفرت اور آتش دوزخ سے آزادی کا ذریعہ ہوگا اور اس کو روزہ دار کے برابر ثواب دیا جائے گا بغیر اس کے کہ روزہ دار کے ثواب میں کوئی کمی کی جائے۔آپؐ سے عرض کیا گیا کہ یا رسول اللہﷺ ہم میں سے ہر ایک کو تو افطار کرانے کا سامان میسر نہیں ہوتا(تو کیا غرباء اس عظیم ثواب سے محروم رہیں گے؟)آپ ﷺ نے فرمایاکہ اللہ تعالیٰ یہ ثواب اس شخص کو بھی دے گا جو دودھ کی تھوڑی سی لسّی پر یا صرف پانی ہی کے ایک گھونٹ پر کسی روزہ دارکا روزہ افطار کرادے ۔اور جو کوئی کسی روزہ دار کو پورا کھانا کھلا دے اس کو اللہ تعالیٰ میرے حوض(یعنی حوض کوثر) سے ایسا سیراب کرے گا جس کے بعد اس کو کبھی پیاس ہی نہیں لگے گی تاانکہ وہ جنت میں پہنچ جائے گا۔اس

کے بعد آپؐ نے فرمایا : اس ماہ مبارک کا ابتدائی حصہ رحمت ہے اور درمیانی حصہ مغفرت ہے اور آخری حصہ آتش دوزخ سے آزادی ہے۔اور جو آدمی اس مہینے میں اپنے غلام و خادم کے کام میں تخفیف اور کمی کردے گا اللہ تعالیٰ اس کی مغفرت فرمادے گا اور اس کو دوزخ سے رہائی اور آزادی دے گا۔ آج ہم رمضان کریم کے پہلے عشرے کا خاص عمل لیکر حاضر ہوئے ہیں جو رحمت کا عشرہ ہے یہ بات بتاتے چلیں کہ آج کا عمل کوئی عام عمل نہیں ہے اس عشرے میں یہ خاص عمل کرنیوالوں کو رحمتیں برکتیں عافیتیں خوشحالی رزق میں برکت وسعت قرض سے نجات کا راستہ جادو ٹونے سے حفاظت اور اس کاحل بھی موجو د ہے ۔ شیاطین سے حفاظت اور نجات کا عمل ہے اس عمل میں دولت عزت اور برکتیں موجود ہیں اس عمل کے بہت سارے راز ہیں ۔ اگر آپ واقعے زندگی میں خوشحالیاں اور برکتوں کا سمندردیکھنا چاہتے ہیں تو اس عمل کو ہر گز پہلے عشرے میں کرنا مت بھولیے گا آ ج کا عمل یہ ہے کہ آپ نے لاالہ الا اللہ استغفراللہ اسئلک الجنۃ واعوذبک من النار اس کو آپ نے اچھے طریقہ سے یاد کرلینا ہے اور کثرت سے پڑھتے رہنا ہے انشاء اللہ آپ کی تمام پریشانیاں تکلیفں دور ہوجائیں گی ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.