امام علیؑ نے فرمایا بچوں کوم۔ارنے والے

امام علی ؑ رستے سے گزر رہے تھے کہ دیکھا ایک شخص اپنے چھوٹے بچے کو م۔ار رہا تھا جیسے ہی امام علیؑ اس شخص کے قریب گئے میں نے رسول اللہﷺ سے سنا چھوٹے بچے کا رونہ اللہ کا وجود اور واحدانیت کی گواہی ہوتا ہے ۔ جب معصوم بچے نیند میں مسکراتے ہیں تو انہیں محمد وآلِ محمد کی زیارت نصیب ہوتی ہے ۔

جب روح جسم میں آتی ہے اور جسم گناہوں سے پاک ہوتا ہے تو ا س وقت فرشتے اللہ کا کرم لے کر اللہ کی برکت کیساتھ معصوم بچوں کے ارد گرد گھومتے رہتے ہیں۔ تمہارا بچہ گناہوں سے پاک ہے ظلم سے پاک ہے حسد سے پاک ہے نفرت سے پاک ہے اے شخص تمہارا تمہارے بچے م۔ارنے تمہیں ہی برباد کرے گا اور تمہارے ہی گھر کا رزق کم کرے گا۔ معصوم بچے کو مارنا انسان کے رزق کو گھٹا دیتا ہے کہنے لگا یا علیؑ میرا چھوٹا سا بچا مجھے تنگ کرتا جب تمہارا بچہ تمہیں ستانے لگے تو اس کے سرپر ہاتھ رکھ کر محمد وآلِ محمدپر درود بھیجا کرو اور جب تمہارا بچہ سو جائے تب بھی اسکے سرپرہاتھ رکھ کر اللہ کے رسولﷺ اور انکے آل پر درود بھیجا کرو۔اللہ تعالیٰ کے کرم سے تمہارا بچہ تمہارے لیے رحمت بن جائے گا۔شکریہ

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *