شبِ برات کی رات پانچ الائچی لے کر یہ عمل کر لو آزما کر معجزہ دیکھ لو گھر میں پیسہ ہی پیسہ آئے گا۔

شب برات اسلام کے آٹھویں مہینے شعبان کی 15ویں رات کو کہتے ہیں، مسلمان اس رات میں نوافل ادا کرتے، قبرستان کی زیارت کرتے اور ایک دوسرے سے معافی چاہتے ہیں۔ اس رات کو مغفرت کی رات اوررحمت کی رات بھی کہا جاتا ہے۔ماہِ شعبان کی پندرہویں رات کو شبِ برات کہا جاتا ہے، شب کے معنی ہیں رات ،

براۃ کے معنیٰ ہیں نجات، اور شبِ برات کا معنیٰ ہے کہ گناہوں سے نجات کی رات، گناہوں سے نجات توبہ سے ہوتی ہے۔ یہ رات مسلمانوں کے لئے آہ و گریہ و زاری کی رات ہے، رب کریم سے تجدید عہد کی رات ہے، شیطانی خواہشات اور نفس کے خلاف جہاد کی رات ہے، یہ رات اللہ کے حضور اپنے گناہوں سے زیادہ سے زیادہ استغفار اور توبہ کی رات ہے۔ اسی رات نیک اعمال کرنے کا عہد اور برائیوں سے دور رہنے کا عہد دل پر موجود گناہوں سے زنگ کو ختم کرنے کا موجب بن سکتا ہے۔اکابرین کہتے ہیں

کہ شعبان کی پندرھویں شب جو شخص دو رکعات نماز نفل پڑھے پھر ہر رکعات میں سورة فاتحہ کے بعد آیت الکرسی ایک بار اور سورة اخلاص پندرہ پندرہ بار پڑھے اور پھر سلام پھیرنے کے بعد 100مرتبہ درود شریف پڑھ کر ترقی رزق کی دعا کرے تو انشاءاللہ اس نماز کی برکت سے اسکے رزق میں ترقی ہو جائے گی۔حضرت ابو بکر صدیقؓ سے روایت ہے کہ حضورِ پاک ﷺ نے فرمایا اے مسلمانو! شعبان کی پندرھویں رات کو عباد ت کے لئے جاگتے رہو اور اس کامل یقین سے ذکر و فکر میں مشغول رہو کہ یہ ایک مبارک را ت ہے اور اس رات میں مغفرت چاہنے والوں کے جملہ گناہ بخش دئیے جاتے ہیں۔ ایک اور حدیث مبارکہ میں حضرت علیؓ سے روایت ہے کہ نبی پاک ﷺ فرماتے ہیں کہ جب شعبان کی درمیانی رات آئے تو رات کو جاگتے ہوئے قرآنِ کریم کی تلاوت کی جائے اور نوافل میں مشغول ہوا جائے ، روزہ رکھا جائے کیونکہ اس رات اللہ اپنی صفات رحمن و رحیم اور رؤف کے ساتھ انسانیت کی جانب متوجہ ہوتا ہے

اور خدا کا منادی پکار رہا ہوتا ہے کہ ہے کوئی معافی مانگنے والا کہ میں اسے معاف کر دوں، کوئی سوال کرنے والا کہ میں اس کا سوال پورا کر دوں، کوئی رزق مانگنے والا کہ میں اسے حلال وافر رزق عطا کر دوں، اور یہ صدائیں صبح تک جاری رہتی ہیں۔اس رات مسلمان توبہ کرکے گناہوں سے قطع تعلق کرتے ہیں اور اللہ تعالیٰ کی رحمت سے بے شمار مسلمان جہنم سے نجات پاتے ہیں اس لیے اس رات کو شبِ برات کہتے ہیں ۔حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے ارشاد فرمایا شعبان کی پندرھویں شب عبادت میں بسر کرو اور دن کو روزہ رکھو، اس شب ہر گناہ بخش دیا جاتا ہے بخشش طلب کرنے والوں کا، رزق طلب کرنے والوں کے رزق میں وسعت عطا کی جاتی ہے۔شب برات کے دن اگر آپ پانچ الائچی پر یہ عمل کر لیتے ہیں تو آپ کے رزق میں انتہائی برکت ہو گی اور آپ کے گھر سے لڑائی جھگڑے ختم ہو جائیں گے تمام دشمنیاں ختم ہوجائیں گی عمل یہ ہے کہ آپ نے پانچ عدد الائچی لینی ہیں اور اس پر یا عزیز یا غفار کو 131 مرتبہ پڑھ لینا ہے اور اول و آخر تین تین بار درود پاک لازمی پڑھیں اور پھر ان لائچیوں کو اپنے کچن میں رکھ لیں اور شب برات کے ہی دن کچھ میٹھا پکا کر اپنے گھر والوں کو بھی کھلائیں اور باہر بھی بانٹ دیں۔انشاء اللہ دولت ہی دولت ہو گی پیسہ ہی پیسہ ہو گا۔ اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.