ماہِ شعبان میں نا پا ک کپڑوں میں سونے سے کیا ہو جا تا ہے؟ پیارے نبی ﷺ کا فر ما ن سن لو!

اگر کوئی نا پاک کپڑوں میں سو جا تا ہے تو یہ کیسا ہے؟ یعنی نا پاک کپڑوں میں سو نا جا ئز ہے یا نہیں توآج ہم آپ کو اس کے بارے میں تفصیلی بتائیں گے کہ آیا کہ نا پاک کپڑوں کے ساتھ سو نا جائز ہے یا نہیں۔ آج ہم آپ کو بتائیں گے کہ طہارت سے متعلق اسلام میں کیا تعلیمات ہیں اور ہم اپنے بھائی کے

اس سوال کا جواب بھی دیں گے اس بارے میں مکمل تفصیل جاننے کے لیے آپ سے التماس ہے کہ ہماری ان باتوں کو بہت ہی زیادہ غور سے سنیے گا۔ یاد رہے کہ انسانی حیات کی ابتداء بھی طہارت سے ہے اور اس کی ا نتہا بھی طہارت ہے طہارت سے لا تعلقی زوال ِ حیات ہے طہارت کی پابندی صحت ہے طہارت سے بیزاری ہے بیماری ہے طہارت سے غفلت سقلِ حیات ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ نگاہِ نبوت میں طہارت وسیع المعانی لفظ ہے اسی لیے رسول اللہ ﷺ نے طہارت کو نصف ایمان قرار دیا ہے۔ جیسا کہ ارشاد فر ما یا کہ صفائی یعنی پاکیزگی نصف ایمان ہے یاد رہے کہ ایمان کا تعلق انسان کے قول سے بھی ہے ایمان کا رد انسان کے فعل سے بھی ہے انسان ایمان سے ہے

اور ایمان انسان سے ہے انسان کی پہچان ایمان سے ہوتی ہے اور ایمان کی شناخت انسان سے ہوتی ہےا ور طہارت اور پاکیزگی کو ایمان کا حصہ فر ما یا ہے یاد رہے کہ اللہ نے طہارت کا ذکر قرآنِ پاک میں مختلف انداز میں فر ما یا ہے ایک جگہ ارشاد باری تعالیٰ ہے۔ جس کا ترجمہ یہ ہے کہ بے شک اللہ بہت توبہ کرنے والوں سے محبت فر ما تا ہے اور خوب پاکیزگی کرنے والوں سے محبت فر ما تا ہے ۔ اس پر کسی نوعیت کی غلاظت نہ ہوں وہ کپڑا صاف ہو دھلا ہوا ہو اس میں کسی قسم کی بد بو نہ ہو۔ اس میں کوئی عیب دار داغ نہ ہو۔ ان کپڑوں میں ظاہری اور باطنی طہارت ہو وہ گردو غبار سے آلودہ نہ ہوں وہ مٹی اور آلودگی کا شکار نہ ہوں

وہ نماز میں ساتھ کھڑے شخص کی طبیعت میں بوجھ پیدا نہ کرے۔ ان سے خوشبو تو آئے مگر بد بو نہ آ ئے وہ انسان کے جسم کو ڈھانپیں مگر اس کو ننگا نہ کر یں وہ شرعی سطر پوری کر یں جسم کی نا پا کی اور کپڑوں کی نا پا کی یہ دونوں رکاوٹ ہیں۔ یاد رہے کہ اس نا پا کیوں کی وجہ سے اس پاک ذات کے ساتھ تعلق پیدا نہیں ہو سکتا ۔ اس سے ملنے کے لیے ہمیں پاک ہو نا ہوگا۔ اس کے دید کے لیے ملاقات کے لیے بندوں کو ان صفات کا حکم دیا گیا ہے خود کو پاک رکھو تا کہ رب سے ملا قات کر سکو۔ کیونکہ رب پاک ہے اور پا کی کی حالت میں ہی رب سے ملا قات ہو سکتی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.