یَا سَلاَمُ” کو چلتے پھرتے اس طرح پڑھ لیا کریں۔

چلتے پھرتے اللہ کا یہ نام پڑھ لیں دولت کے تمام خزانے مل جائیں گے۔ ہر موذی بیماری سے شفاء مل جائے گی ۔ نصیب اور تقدیر بدل جائے گی۔ یہ وظیفہ بہت ہی مجر ب ہے ۔ یہ بہت ہی خاص اور شاندار عمل ہے۔ آج کے ہر دور میں ہر کوئی چاہتا ہے کہ وہ موذی بیماری سے محفو ظ رہے اور اللہ اسے

شفاء عطا فرمائے۔ اس کی نصیب اور تقدیر بدل جائے ہر مقصد ، ہر حاجت پوری ہوجائے اور وہ مال دار بن جائے تو وہ اس عمل کو لازمی کریں۔ یہ وظیفہ آپ نے چلتے پھرتے کرنا ہے اور “یَا سَلاَ مُ” کو سو مرتبہ پڑھنا ہے ۔ تین مرتبہ درود پاک پڑھنا ہے آخر میں اللہ تعالیٰ سے دعا کرنی ہے اس عمل کو تین روز تک کرناہے۔ انشاءاللہ اس عمل کی برکت سے اللہ پاک آپ کی تمام موذی بیماریوں کو دور فرمادےگا۔ دولت اور رزق کے تمام خزانے مل جائیں گے مگر جگہ کم پڑ جائے گی۔ اللہ پاک آپ کے تمام حاجا ت کو پورا فرمادےگا۔ اللہ پاک آپ کو غنی اور مالدار کردے گا۔ وظیفہ کرنے سے پہلے کچھ صدقہ و خیرات کر لیا کریں۔ لیکن اگر نہیں کر سکتے تو دوسروں تک اس عمل کو پہنچائیں ۔ کیونکہ اس عمل سے دوسروں کو فائد ہ حاصل ہوگا۔ اور اس عمل کو بھی صدقہ جاریہ کہتے ہیں۔ آپ اس وظیفے پر عمل کریں ۔ اور دوسروں کو بھی اس کی تلقین کریں۔ انشاءاللہ اس وظیفے کی وجہ سے بہت فائدہ ہوگا۔ آمین۔ اللہ تعالیٰ نے عبادت کے بعد رزق تلاش کرنے کا حکم دیا ہے۔اس لئے محنت کیجئے ۔اور پھر دعا سے رزق میں برکت ڈالئے۔ حضرت امداد اللہؒسے منقول ہے کہ جو شخص صبح کو ستر مرتبہ پابندی سے یہ آیت پڑھا کرے ،وہ رزق کی تنگی سے محفوظ رہے گا

۔ یہ بہت اچھا عمل ہے، آیت مندرجہ ذیل ہے :اگر آپ کا غصہ شدید ہے اور آپے سے باہر ہوجاتے ہیں تو ایک سو ایک(۱۰۱) دفعہ مذکورہ آیت اکیس (۲۱) دن تک چینی یا شکر پر پڑھیں پھر اس کو چائے یا پانی میں ڈال کر پی جائیں۔ابن عساکر میں ہے کہ حضرت جبریل ؑ،حضورپاک ﷺ کے پاس تشریف لائے ، اور فرمایا کہ (اَللّٰھُمَّ ذَا السُّلْطٰنِ الْعَظِیْمِ وَالْمَنِّ الْقَدِیْمِ ذَا الْوَجْہِ الْکَرِیْمِ وَلِیَّ الْکَلِمٰتِ التَّآ مَّاتِ وَالدَّعْوَاتِ الْمُسْتَجَابَاتِ عَافِ الْحَسَنَ وَالْحُسَیْنَ مِنْ اَنْفُسِ الْجِنِّ وَاَعْیُنِ الْاِنْسِ) پڑھ کر دعا کیا کیجئے۔یہ بری نظر سے حفاظت کا بہترین نسخہ ہے۔آپ ﷺ نے یہ دعا حضرت امام حسنؓ اور حضرت امام حسینؓ پر بھی پڑھی تھی۔حضورپاک ﷺنے فرمایا : ’’لوگو! اپنی جانوں کو ، اپنی بیوی اور اپنی اولاد کو اسی دعا کی پناہ میں دیا کرو، اس جیسی اور کوئی پناہ کی دُعا نہیں‘‘۔(تفسیر ابن کثیر )

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.