شعبان کے مہینے میں سات دن سورۃ فاتحہ کو اس طرح پڑھیں

آج میں آپ کےساتھ شعبان کے پہلےآ ٹھ دن کا وظیفہ شئیر کروں گی جو کہ بہت ہی مجرب اور آسان ہے قرآنی سورۃ کا وظیفہ ہے اور بہت ہی آسان عمل ہے جس کو آپ نے سات دنوں میں مکمل کر نا ہے یعنی ایک چھوٹی سی سورۃ کو سات دنوں پر دیوائڈ کر کے اس سورۃ کا وظیفہ کر نا ہے اللہ کی رحمت آپ

پر بارش کی طرح ضرور برسے گی اس عمل کو آپ نے ماہِ شعبان کے پورے مہینے میں جب آپ کا دل چا ہے آپ اس عمل کو اس وظیفے کو کر سکتے ہیں ماہِ شعبان کے پورے مہینے میں صرف سات دن آپ نے اس عمل کو کرنا ہے سات دن کے عمل سے اللہ تعالیٰ آپ کا پورا سال اس وظیفے کے فوائد سے نوازتا رہے۔ گا اس وظیفے کے بے شمار فائدے ہیں جن کا میں آپ کےساتھ ذکر کروں گی شعبان کی فضیلت تو میں شئیر کر ہی چکی ہوں آپ کے ساتھ کہ شعبان کے مہینے کی بہت فضیلت ہے آقاﷺ نے اس مہینے کو اپنی طرف منسوب کیا ہے اپنے سے منسوب کیا اور جب نبی کریم ﷺ خود کہہ رہے ہیں کہ یہ میرا مہینہ ہے توآپ خود ہی اندازہ لگا لیں کہ جس سرورِ کونین کی اپنی اتنی فضیلت ہے اس کے مہینے کی کتنی زیادہ فضیلت ہوگی نبی کریم ﷺ کا جب ہم صدقہ دے کر اللہ سے مانگتے ہیں تو اللہ ہمیں ضرور عطا کر تا ہے۔

تو جب اس پاک مہینے میں نبی کا صدقہ دے کر ہم اللہ سے مانگیں گے تو اللہ اسی خوشی میں عطا کرے گا کہ میرا بندہ میرے نبی کا صدقہ دے کر مجھ سے مانگ رہا ہے میرے محبوب کا صدقہ دے کر مجھ سے مانگ رہا ہے اور اس مبارک مہینے میں مانگ رہا ہے جس مہینے کو میرے محبوب نے اپنے ساتھ منسوب کیا ہے۔ کتنا بڑا انعام ہے ماہِ شعبا ن کے مہینے کا ماہِ شعبان کے مہینے میں کثرت سے عبادت کیا کر یں نفلی عبادت کر یں روزے رکھیں صدقہ و خیرات دیں اللہ کے بتائے ہوئے احکا مات پر عمل کر یں یہ چھوٹے چھوٹے اعمال سے آپ کو اللہ ڈھیر سی فضیلت عطا کر ے گا۔

یاد رکھیں کہ جس مقصد کے لیے آپ نے اس عمل کو کر نا ہے اور اس عمل کو اپنے ذہن میں رکھ لینا ہے اور اس وظیفے کے مکمل ہونے تک اپنی حاجت کو ذہن میں رکھنا ہے۔ تنہائی میں بیٹھ کر اس عمل کو کرنا ہے پورا دھیان آپ کا وظیفے کی طرف ہو۔ اس وظیفے کو ہفتے میں ڈیوائڈ کر دینا ہے۔ اور ہر آیت کو تین سو تیراہ مر تبہ پڑھنا ہے۔ انشاء اللہ اللہ پاک آپ کی ہر حاجت قبول فر ما لیں گے۔ اور آپ کی ہر مشکل آسان ہو جا ئے گی ۔ اللہ کے حکم سے آپ کی بڑی سے بڑی حاجت بھی مکمل ہو جا ئے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.