رمضان المبارک میں افطار دسترخوانوں پر پابندی عائد کر دی گئی

دبئی (نیوز ڈیسک ) رمضان المبارک کی آمد آمد ہے،،،یہ ایساخوبصورت اور شاندار مہینہ ہے کہ جس کا انتظار دنیا بھر کے مسلمان بڑے جوش و جذبے سے کرتے ہیں۔اس مہینے کی آمد کے ساتھ جس قسم کی ملنساری اور انسانی ہمدردی کی مثالیں نظر آتی ہیں اتنی کسی اور موقعہ پر کم ہی دکھائی دیتی ہیں۔مگر اس بار رمضان المبارک ایک ایسی عالمی وبا کے دنوں میں آ رہا ہے کہ جب دنیا بھر میں لاک ڈاؤن لگا ہوا ہے لہٰذا اس بار رمضان المبارک میں وہ دل آفروز

مناظر دیکھنے کو نہیں ملیں گے جو اس مبارک مہینے کا خاصہ ہیں۔ اس بار اس شاندار مہینے میں بھی کورونا ایس او پیز کو لاگو کرنے کے احکامات صادر کیے جا رہے ہیں۔جس کے حوالے سے سب سے پہلے دبئی حکومت نے افطار دسترخوانوں پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ شارجہ ایمرجنسی کرائسز اینڈ ڈزاسٹر مینجمنٹ نے اس پر رمضان المبارک میں کورونا کو مدنظر رکھتے ہوئے کئی ایس او پیز اور قواعد و ضوابط لاگو کر دیے ہیں۔ جس کے مطابق اس سال رمضان المبارک میں دبئی اور شارجہ میں افطار دستر خوان لگانے کی اجازت نہیں ہے۔حکومت کی طرف سے جاری کیے گئے نوٹس کے مطابق فیملی اور دفتری افطار پارٹیوں کی اجازت بالکل بھی نہیں ہے۔گروپ کی صورت میں ہونے والی افطار پارٹیاں کرنے کی بھی اجازت نہیں ہے جبکہ ریستورانوں،گھروں اور عوامی جگہوں پر مجمع لگا کر پارسل کی صورت میں بھی افطار دینے پر مکمل پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ افطار کھانوں پر اسپیشل آفر کے اشتہار لگانے پر بھی پابندی عائد کرنے کے ساتھ ساتھ بوفے پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔جبکہ خیراتی مد میں افطار کھانے دینے کی اجازت صرف حکومتی افراد اور تنظیموں کے علاوہ متعلقہ اداروں کو ہو گی۔اور اس صورت میں ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کروایا جائے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.