عمران خان کیخلاف وزیراعظم ہاؤس کا اعلیٰ بیوروکریٹ سلطانی گواہ بننےکیلئے تیار، وزیراعظم کو بڑی سازش سے بروقت آگاہ کر دیا گیا

لاہور (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کیخلاف وزیراعظم ہاؤس کا اعلیٰ بیوروکریٹ سلطانی گواہ بننے کیلئے تیارہوگیا، اگر اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوئی اور حکومت نے پانچ سال پورے نہ کیے تو ایک بیوروکریٹ عمران خان کیخلاف سلطانی گواہ بن جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے اپنے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ عمران خان کی حکومت پانچ سال پورے کرے تو اچھی بات ہے لیکن اگر اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوئی اور حکومت پانچ سال پورے نہ کرسکی۔

ایسے میں وزیراعظم عمران خان کیخلاف وزیراعظم ہاؤس کا اعلیٰ ترین بیوروکریٹ سلطانی گواہ بن جائے گا۔ عمران خان کو اس بیوروکریٹ کا پتا بھی ہے۔مزید بتایا کہ مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہبازکو پنجاب کے اعلیٰ سرکاری افسران نے تین اہم کاموں میں کرپشن کی فائلیں پہنچائی ہیں، فائلوں میں موجودہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی غیرقانونی طور پر ہونے والے کاموں اورکرپشن کی دستاویز ہیں۔

بیوروکریسی اقتدار کا رخ تبدیل ہوتے دیکھ رہی ہے۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے پنجاب میں انتظامی طور بڑی تبدیلیوں کا عندیہ دے دیا ہے، وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب کے درمیان ملاقات بھی ہوئی جس میں پنجاب میں وزراء اور انتظامی افسران کی کارکردگی پر بات چیت کی گئی۔ اجلاس میں وزیراعظم نے پنجاب میں انتظامی طور بڑی تبدیلیوں کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں اہم پوسٹوں پر انتظامی تبدیلیاں کارکردگی کی بنیاد پر کی جائیں گی، تبدیلیوں کا مقصد گڈگورننس کو بہتر بنانا ہے۔

اسی طرح ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے عثمان بزدار کو ڈٹ کر کام کرنے کی ہدایت کی ہے، جس کے ساتھ سے ظاہر ہوگیا ہے کہ عمران خان کا وزیراعلیٰ پنجاب عثمان کو تبدیل کرنے کا کوئی ارادہ نہیں۔ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب کو اسلام آباد میں ملاقات ہوئی جس میں پنجاب کے سیاسی و انتظامی اور عوامی مسائل سے متعلق امور زیر بحث آئیں گے۔ ملاقات میں 18مارچ کو ڈسکہ میں ضمنی الیکشن پر بھی پی ٹی آئی کی تیاریوں کا جائزہ لیا گیا، وزیراعظم نے الیکشن میں کامیابی کیلئے بہترین حکمت عملی بنانے کی ہدایت کی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.