اقتدار جاتا ہے تو جائے،چوروں کو نہیں چھوڑونگا۔۔۔ملکی سیاسیت میںہلچل ،وزیراعظم کے حتمی اعلان نے اپوزیشن اتحاد پر سکتہ طاری کردیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وزیراعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں پرسوں اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لوں گا۔ ممبران کا جمہوری حق ہے کہ وہ اپنی رائے دیں وہ کھل کر اپنی رائے دیں میں ان کی رائے کا احترام کروں گا، مگر کسی کو این آراو نہیں دوں گا۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شفاف انتخابات الیکشن کمیشن کی سب سے بڑی ذمہ داری تھی اور یہ آئینی ذمہ داری تھی۔ کیا آئین چوری کرنے رشوت دینے کی

اجازت دیتا ہے؟ تحریک انصاف کو جتنی سیٹیں ملنی تھیں اتنی مل گئیں۔ الیکشن کمیشن کی وجہ سے جو رکن بکے ان کو ٹریک نہیں کیا جاسکتا،سب کے سامنے تماشہ ہوا ۔ جب ملک کی لیڈر شپ رشوت دیگی تو کیا باقی لوگ ٹھیک ہوجائیں گے؟1500 بیلٹس کے اوپر کیا کوڈنگ نہیں ہوسکتی تھی؟ آج کیا ہماری جمہوریت اوپر گئی ہے یا نیچے؟عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمیں ہمیشہ آخرت کی فکر کرنی چاہیے۔ اپوزیشن کا خیال تھا کہ ان کو این آر او مل جائے گا۔ حکومت مجھے سفر اور سیکیورٹی کا پیسہ دیتی ہے باقی سارے خرچے میں خود کرتا ہوں۔ ملک مشکل وقت سے گزررہا ہے مجھے خوف خدا ہے۔ اقتدار میں نہ ہونے سے مجھے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ جب تک پیسے واپس نہیں کریں گے میں نے آپ کو نہیں چھوڑنا۔ قوم چوروں کا پیسہ بچانے کے لیے نکلتی ، جب تک زندہ ہوں قانون کی بالادستی کے لیے جدوجہد جاری رکھوں گا۔ یہ لوگ ملک کے غدار ہیں ،یہ ملک تب عظیم بنے گا جب یہ چور اور ڈاکو جیلوں کےا ندر ہونگے۔وزیر اعظم نے کہا کہ پی ڈی ایم کے رہنماوں کو مخاطب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ اگر میرا اقتدار چلا بھی جائے تو بھی مجھے فرق نہیں پڑتا میں اپوزیشن میں بیٹھ کر کرپٹ عناصر کے خلاف آواز بلند کروںگا اور اگر میں اسمبلی سے باہر بھی چلا جاؤں گا تو بھی کرپٹ ٹولے کے خلاف جدو جہد جاری رکھوں گا ۔انہوں نے کہا کہ میں اسمبلی سے باہر جا کر لوگوں کو کرپٹ ٹولے کے خلاف باہر نکال کر دکھاوں گا کیونکہ لوگ چوروں کے خلاف سڑکوں پر خود آتے ہیںوزیراعظم عمران خان نے کہا کہ سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ پر ہوتا تو تحریک انصاف کو اتنی ہی سیٹیں ملتیں جتنی ملنی تھیں، اپوزیشن نے اسلام آباد سے سینیٹ کی سیٹ پر پیسہ لگایا۔وزیراعظم نے کہا کہ صاف اور شفاف انتخابات الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے، سب سے پہلے تو مجھے یہ بات سمجھ نہیں آئی کہ کیوں الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ میں جاکر کہا کہ خفیہ بیلٹ ہونا چاہیے، کوئی آئین اجازت دیتا ہے رشوت دینے کی؟ کوئی آئین اجازت دیتا ہے چوری کرنے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.