دُبئی کی سڑک پر بڑی مالیت کے یورو اور ڈالر لُٹانے والے نوجوان کی قسمت کا فیصلہ ہو گیا

دُبئی میں کچھ عرصہ قبل ایک نوجوان نے ایک مصروف شاہراہ پر گاڑی روک کر لوگوں امریکی ڈالر اور یورو کرنسی کے بڑے نوٹ لُٹائے تھے۔ تاہم اس نوجوان کو اپنی یہ شیخی بہت بھاری پڑ گئی ہے۔عدالت نے اس یوپری نوجوان کو قید کی سزا سُنا دی ہے اور 2 لاکھ درہم کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق نوجوان نے سڑک پر کھڑے ہو کر امریکی ڈالر اور یورو کرنسی کے 500 کی

مالیت کے جعلی نوٹ پھینکے تھے، اور اپنی اس جعلسازی کی ویڈیو بھی بنا کر سوشل میڈیا پر پوسٹ کی تھی۔
تاہم انسٹاگرام اکاؤنٹ پر وائرل ہونے والی یہ ویڈیو جب پولیس کے نوٹس میں آئی تو اس نوجوان کو گرفتار کر لیا گیا۔ یہ نوجوان اپنا بزنس کرتا ہے۔ مقدمے کی سماعت کے دوران استغاثہ نے بتایا کہ نوجوان نے یہ اوچھی حرکت سوشل میڈیا پلیٹ فارم انسٹا گرام پر شہرت حاصل کرنے اور جلداز جلد زیادہ فالوورز حاصل کرنے کے لیے کی تھی۔وائرل ویڈیو میں نوجوان القوز انڈسٹریل ایریا میں گاڑی چلاتا دکھائی دے رہا ہے۔

اسی دوران وہ گاڑی روک دیتا ہے اور کارکنان کے ہجوم کو اپنی جانب متوجہ کر کے جیب سے ڈالر اور یورو کے جعلی نوٹ پھینکنا شروع ہو جاتا ہے۔ یہ غیر ملکی کارکنان ان نوٹوں کو اصلی سمجھ کر آگے بڑھ بڑھ کر لُوٹنا شروع کرتے ہیں۔تھوڑی دیر میں اور لوگ بھی اکٹھے ہو جاتے ہیں اور آپس میں چھینا جھپٹی کر کے نوٹ لوٹنے میں مست ہوجاتے ہیں۔ نوجوان کا کہنا تھا کہ اس نے سوشل میڈیا پر اپنی امارات کی دھاک بٹھانے کے لیے جعلی نوٹ پھینک کر ویڈیو بنائی تھی۔ نوجوان نے 7 لاکھ 40 ہزار امریکی ڈالر کے جعلی نوٹ لُٹائے تھے۔ ملزم نے اعتراف کیا کہ اس نے ایک ایشیائی سے ایک ہزار درہم کے عوض یورو کے جعلی نوت خریدے تھے۔ جعلی کرنسی فروخت کرنے والے اس ایشیائی شخص کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.