لائیو پروگرام میں پی ٹی آئی کے لیے وارننگ جاری

کراچی(ویب ڈیسک)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے کہا ہے کہ الیکشن کے نتائج نہیں روکے جاسکتے کیونکہ ایسا کوئی قانون نہیں، سیکرٹری جنرل ن لیگ احسن اقبال نے کہا کہ پریزائیڈنگ افسران کو کس جگہ لے جایا اور معاوضہ دیا گیا، سب معلومات اکٹھی کررہے ہیں، سابق سیکرٹری الیکشن کمیشن کنور دلشاد نے کہا ہے کہ غائب کئے گئے پریزائڈنگ افسران کے نتائج میں ٹیمپرنگ کی گئی، سینئر صحافی و تجزیہ کار سلیم صافی نے کہا

کہ عمران خان کے نام پر ووٹ پڑنے کا وقت گزر چکا ہے۔ نوشہرہ کی نشست ہارنے کی بنیادی وجہ پرویز خٹک اور لیاقت خٹک کے اختلافات، اختیار ولی کی ذاتی شخصیت اور پی ڈی ایم جماعتوں کی ن لیگ کو سپورٹ کا ہے، وہ نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کررہے تھے، سابق سیکرٹری الیکشن کمیشن کنور دلشاد نے مزید کہا کہ پریزائیڈنگ افسران کو کسی منصوبہ بندی کے تحت اغوا کیا گیا تھا، پریزائیڈنگ افسران صبح 6بجے واپس آئے، غائب کیے گئے پریزائیڈنگ افسران کے نتائج میں ٹیمپرنگ کی گئی،ریٹرننگ افسر نے اپنی رپورٹ میں ان پریزائیڈنگ افسران کے نتائج مشکوک قرار دیئے ہیں، اس تمام واقعہ سے متعلق الیکشن کمیشن منگل کو فیصلہ کرے گا۔ کنور دلشاد کا کہنا تھاکہ پریزائیڈنگ افسر ووٹوں کی گنتی کے بعد الیکشن کمیشن کا پروفارما 45 تیار کرتا ہے جس پر تمام پولنگ ایجنٹوں کے دستخط کروائے جاتے ہیں، الیکشن ایکٹ کے مطابق پروفارما پر پولنگ ایجنٹوں کے دستخط لازمی شرط ہے، الیکشن کمیشن بارہ گھنٹے غائب رہنے والے پریزائیڈنگ افسران کو طلب کر کے حقائق معلوم کرے، الیکشن کمیشن ان پریزائیڈنگ افسران کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کرائے، الیکشن کمیشن بیلٹ پیپرز کی ازسرنو گنتی اور کاؤنٹر فائل و شناختی کارڈز چیک کرے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.