پیپلزپارٹی کے بعد ن لیگ اِن ہاؤس تبدیلی کیلئے تیار۔۔۔۔ آصف زرداری نے نوازشریف کو قائل کرلیا۔ تحریک عدم اعتماد کی ناکامی کی صورت میں کیا کیا جائے گا؟

لاہور(ویب ڈیسک )میڈیا رپورٹس کے مطابق پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کو اِن ہاؤس تبدیلی کے لیے نہ صرف قائل کیا ہے بلکہ پی ایم ایل این نے انہیں مکمل حمایت کا عندیہ بھی دے دیا ہے۔اس حوالے سے ایک خبر رساں ادارے کا دعویٰ ہے کہ پی ڈی ایم اِن ہاؤس تبدیلی، استعفوں، لانگ مارچ اور دھرنا آپشن استعمال کرے گی، سینیٹ الیکشن کے بعد پی ڈی ایم ان آپشنز پر غور

کے لئے سرجوڑنے کی تیاری کر رہی ہے۔دوسری جانب پیپلزپارٹی اِن ہاؤس تبدیلی کیلئے نمبر گیم پوری کرے گی تو پی ڈی ایم حمایت کرے گی، اِن ہاؤس تبدیلی کے آپشن کی ناکامی ہوئی تو ایسی صورت میں پی پی نے استعفے کے آپشن پر مشروط آمادگی کا بھی اظہار کردیا ہے۔مگر یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ لانگ مارچ کے موقع پر استعفوں کا آپشن عوامی رد عمل پر منحصرہوگا، اس کے علاوہ زرداری، نواز رابطہ اور پی ڈی ایم اتحاد برقرار رکھنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں 2 روز قبل آصف زرداری اور نواز شریف کے مابین ٹیلی فون پر رابطہ ہوا تھا۔اس ٹیلفونک گفتگو کے دوران آصف زرداری اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان رابطے میں اپوزیشن کے لانگ مارچ اور سینیٹ انتخاب میں پی ڈی ایم کے امیدواروں کی کامیابی کی بھرپور کوششوں پر اتفاق کیا گیا۔جس کے بعد نوازشریف نے بھی سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان کو ٹیلی فون کیا اور سینیٹ الیکشن اور حکومتی جماعت کے ارکان کی پیسے لینے کی ویڈیو سے متعلق تبادلہ خیال ہوا اور اس سے متعلق مستقبل کی حکمت عملی پر بھی غور کیا گیا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.