فارن فنڈنگ کیس: پی ٹی آئی کیلئے ایک اور مشکل کھڑی ہوگئی

لاہور(ویب ڈیسک ) فارن فنڈنگ کیس میں پی ٹی آئی کیلئے ایک اور مشکل کھڑی ہوگئی، پی ٹی آئی کی جانب سے اپنے ملازمین کو عطیات وصول کرنے کی اجازت دی،نجی خبررساں ادارے کی رپورٹ میں حیرت انگیز انکشافات سامنے آگئے۔حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف کے ملازمین کی ایک

دستاویزی فہرست سامنے آئی ہے جنہیں ملک کے اندر اور بیرونِ ملک سے عطیات وصول کرنے کی اجازت دی گئی تھی، ڈان نیوز کی رپورٹ کے مطابق دستیاب دستاویز میں ان ملازمین کے نام بھی سامنے آئے ہیں جن میں مبینہ طور پر پی ٹی آئی کے ٹیلی فون آپریٹر طاہر اقبال، کمپیوٹر
آپریٹر محمد نعمان افضل، اکاؤنٹنٹ محمد ارشد اور پی ٹی آئی کے دفتر کے ہیلپر محمد رفیق شامل ہیں۔پی ٹی آئی ملازمین کو فنڈز اکٹھے کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ یکم جولائی 2011 کو پارٹی اجلاس میں کیا گیا تھا جس میں پارٹی کے موجودہ چیف آرگنائزر اور سینیٹ کے ٹکٹ کے خواہشمند سیف اللہ نیازی، موجودہ سیکریٹری جنرل عامر محمود کیانی، حال ہی میں تعینات ہونے والے پمز کے چیئرمین آف دی بورڈ آف ڈائریکٹرز، سردار اظہر طارق خان، پارٹی کے سابق سیکریٹری خزانہ اور پاکستان کے حالیہ سفیر برائے کرغزستان کرنل یونس علی رضا اور طارق آر شیخ شریک تھے۔نجی خبررساں ادارےکے مطابق اس حوالے سے مشیرمالیات سراج احمد سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ چاروں ملازمین کو ایک مرتبہ کیلئے اجازت دی گئی تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.