نئے دور کا ایک اور نمونہ : بالی وڈ کی مشہور خاتون شادی کیے بغیر بچے کی ماں بن گئیں ۔

اپنی مرضی سے ماں بننے کا انتخاب کرنا پانا ہی اصل آزادی ہے۔ اگر آپ کے پاس بچہ پیدا کرنے کی آزادی ہے تو آپ کا ماں بننے کا تجربہ مختلف ہوتا ہے۔ آج کے دور میں خوتین اپنی مرضی سے ماں بننے کا فیصلہ کر سکتی ہیں۔ وہ ایسا کر بھی رہی ہیں۔ نامور بھارتی خاتون صحافی چنکی سنہا

بی بی سی کے لیے اپنی ایک رپورٹ میں لکھتی ہیں۔ وہ بھی بغیر کسی پچھتاوے کے۔‘یہ کہنا ہے امریکہ کی فیمینسٹ مصنفہ بیٹی فرائڈن کا۔ممبئی میں رہنے والی 45 سالہ فلمساز آشیما چھبر نے 43 برس کی عمر میں آئی وی ایف ٹیکنالوجی کی مدد سے بچہ پیدا کیا اور اس کے لیے انھیں ایک پیشہ ور ٹیم کی مدد لینی پڑی۔ لیکن ان کا کہنا

ہے کہ اس عمر میں بچہ پیدا کرنے کی یہ واجب قیمت ہے۔آشیما نے بی بی سی کو بتایا کہ ’میں نہیں چاہتی تھی کہ مزید کسی مرد کا انتظار کروں جو ایک دن آئے اور میری ماں بننے کی آرزو پوری کرے۔‘آشیما نے بتایا کہ ’آج کے دور میں بچوں کی پرورش کی مدد کرنے والے شخص کا انتخاب اپنے لیے ہم سفر کے انتخاب سے زیادہ اہم ہے۔‘آشیما کے بچے کے دیکھ بھال کرنے گھر میں

دو خواتین اور دوست ہی ان کے لیے خاندان کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ آشیما کی ماں بھی حیدر آباد سے ان کے پاس آتی جاتی رہتی ہیں تاکہ بچے کی پرورش میں مدد کر سکیں۔آشیما چھبر ایک فلم ڈائریکٹر ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ وہ بچہ پیدا کرنا چاہتی تھیں لیکن اپنی پسند کا ساتھی نہ مل پانے کی وجہ سے وقت ان کے ہاتھوں سے پھسلتا جا رہا تھا۔جولائی 2015میں انڈین سپریم کورٹ نے فیصلہ سنایا تھا کہ ’جب کوئی سنگل مدر بچے کے برتھ سرٹیفیکیٹ کے لیے درخواست دیتی ہے تو اس پر اس بات کا دباؤ نہیں ہونا چاہیے کہ وہ بچے کے والد کا نام واضح کرے۔سپریم کورٹ نے کہا تھا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.